User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 1 day ago
گومل یونیورسٹی میں کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے حوالے سے دو مختلف تقریبات کا انعقاد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ27اکتوبر 2020)گومل یونیورسٹی میں 27اکتوبر بلیک ڈے کی مناسبت سے کشمیری عوام سے اظہاریکجہتی کیلئے دو مختلف تقریبات کا انعقاد کیا گیا۔ بلیک ڈے کی مناسبت سے پہلی تقریب گومل یونیورسٹی کے وینسم کالج کے شعبہ طالبات میں منعقد ہوئی جس کی صدارت پرنسپل گرلز سیکشن شہلا شیخ نے کی۔ جبکہ مرکزی تقریب گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس میں عبدالقدیر خان آڈیٹوریم میں شعبہ پولیٹیکل سائنس کے زیر اہتمام منعقد ہوئی اس موقع پر ڈین فیکلٹی آرٹس پروفیسر ڈاکٹر نعمت اللہ بابڑ،ڈین فیکلٹی آف لاء اینڈ ایڈمنسٹریٹیو سائنسز پروفیسر ڈاکٹر زاہد اعوان، چیئر مین شعبہ پولیٹیکل سائنسزڈاکٹر محمد زبیر، سمیت دیگر شعبہ جات کے اساتذہ و طلباء کی بڑی تعداد نے شرکت کی ۔تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر نعمت اللہ بابڑ نے کہا کہ آج کے دن ہندوستان نے اپنے ناپاک قدم کشمیرکی سرزمین پررکھ کر اس پر ناجائزہ قبضہ کرکے کشمیریوں پر ظلم وستم کے پہاڑ توڑ دیئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے اور کشمیریوں پر ہونیوالے مظالم پاکستانی اپنے اوپر محسوس کرتے ہیں۔چیئر مین شعبہ پولیٹیکل سائنسز ڈاکٹر محمد زبیر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں پر بھارتی فوج کی جانب سے ہونیوالے ایک تاریخی کرفیو میں کشمیری جس مشکل، کٹھن اور بدترین دور سے گزر ے اس کو بیان کرنا ناممکن ہے اور اوپر سے عالمی وباء کورونا نے ان کی زندگی کو مزید مشکلات سے دوچار کر دیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ بھارتی فوج آئے روز کشمیری بہنوں کی عصمت دری کر رہی ہے، نوجوانوں کو شہید کیا جا رہا ہے تاکہ آزادی کی آواز کو دبایا جا سکے ۔ مگر صرف کشمیر ہی نہیں بلکہ پاکستان کا ہرشہری کشمیر کی آزادی تک آواز اٹھاتا رہے گا۔ ڈاکٹر زبیر نے مزید کہا کہ عالمی میڈیا کی بھارتی مظالم و بربریت پر خاموشی لمحہ فکریہ ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ 1931میںبھارتی فوج جمعہ کے دن اذان کو روکتی ہے مگر 22جوان اپنی جانوں کا نذرانہ دے کر اذان پوری کرتے ہیں اور شہادت کے رتبہ پر فائز ہو جاتے ہیں ۔ یہ جذبہ ایمانی انڈیا اپنے مکروہ ارادوں سے آج تک نہ ختم کر پایا اور نہ ہی کر پائے گا۔ تقریب سے شعبہ پولیٹیکل سائنسز کے اسسٹنٹ پروفیسر ، ڈاکٹر اسماعیل خان ، لیکچررصائمہ رزاق خان نے بھی کشمیریوں سے اظہار یکجہتی ک
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 2 days ago
گومل یونیورسٹی کے انسٹیٹیوٹ آف فوڈ سائنسز اینڈ نیوٹریشن میں خواتین کے اندر چھاتی کے سرطان کے حوالے سے آگاہی سیمینار کا انعقاد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ26اکتوبر 2020)گومل یونیورسٹی کے سٹی کیمپس میں خواتین کے اندر چھاتی کے کینسر کے حوالے سے انسٹیٹیوٹ آف فوڈ سائنسز اینڈنیوٹریشن نے آگاہی سیمینار کا انعقاد کیا اس موقع پر چیئرمین فوڈ اینڈ نیوٹریشن ڈاکٹر صدف جویریہ'دینار ہسپتال کی میڈیکل آفیسر اور نیوکلیئر فزیشن ڈاکٹر زہرا رحمان'دینار ہسپتال کے فارماسسٹ ڈاکٹر سعد عبداللہ سمیت گومل یونیورسٹی سٹی کیمپس کے مختلف شعبہ جات کی خواتین اساتذہ اور طالبات کی بڑی تعداد شریک تھی۔ڈاکٹر زہرا رحمن اور ڈاکٹر سعد عبداللہ نے خواتین میں چھاتی کے سرطان کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ پاکستان میں چھاتی کے سرطان میں اضافہ ہونے کی سب سے بڑی وجہ اس بیماری کے بارے میں مکمل آگاہی نہ ہونا ہے ۔خواتین میں پایا جانے والے چھاتی کا سرطان لاعلاج نہیں اس کی بروقت تشخیص سے اس بیماری کا علاج ممکن ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ اکتوبر کا مہینہ چھاتی کے سرطان کی آگاہی کے حوالے سے منایا جاتا ہے لہٰذا آج کا آگاہی سیمینار بھی اس کی ایک کڑی ہے تاکہ زیادہ سے زیادہ خواتین میں اس کی آگاہی ہو سکے اور کئی زندگیاں ضائع ہونے سے بچ جائیں اس موقع ڈاکٹر زہرا نے خواتین کو چھاتی کے سرطان جیسی موذی مرض سے بچا ئوکے بارے میں تفصیل سے آگاہ کیا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 9 days ago
تعلیمی اداروں میں کھیلوں کی سرگرمیاں انتہائی ضروری ہیں'وائس چانسلر گومل یونیورسٹی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ19اکتوبر 2020) وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی زیر صدارت گومل یونیورسٹی سے ملحقہ کالجوں کے کھیلوں کا سالانہ اجلاس 2020-21کا انعقاد کیا گیا جس میں ڈائریکٹر سپورٹس ڈاکٹر سیدضیاء الاسلام سمیت ملحقہ کالجوں کے شعبہ سپورٹس کے سربراہان نے شرکت کی۔ میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے اس موقع پر کہا کہ تعلیمی اداروں میں کھیلوں کی سرگرمیاں انتہائی ضروری ہیں۔ان سے طلباء میں برداشت کا مادہ پیدا ہوتا ہے۔ ہار جیت کھیل کا حصہ ہوتے ہیںاور جب کوئی کھلاڑی ہار جاتاہے تو اگلے میچ میں مزید محنت ، لگن اور ایک نئے جذبہ کیساتھ دوبارہ حصہ لیتا ہے ۔جسے سپورٹس مین سپیرٹ کہا جاتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کھیلوں کی سرگرمیوں سے طلباء منفی سرگرمیوں سے بچ جاتے ہیں ۔سپورٹس میں حصہ لینے سے طلباء میں لیڈر شپ کی خصوصیات دیکھنے کو ملتی ہیں کہ وہ کس طرح سے اپنے دیگر ٹیم ممبران کو لے کر کامیابی حاصل کرنے کیلئے تگ و دو کرتے ہیں۔ ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ جن علاقوں میں کھیلوں کے میدان آباد ہوتے ہیں ان علاقوں کے ہسپتال ویران ہوتے ہیںاور وہاں کے نوجوان منشیات جیسی لعنت سے دورہوتے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کیلئے یہ اعزاز کی بات ہے کہ صوبہ خیبرپختونخوا کی تمام یونیورسٹیوں سے زیادہ سپورٹس گرائونڈ گومل یونیورسٹی کے پاس ہیں ۔وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے ڈائریکٹر سپورٹس ڈاکٹر ضیاء الاسلام کو ہدایت دی کہ وہ تمام کالجوں سے فٹبال کے بہترین کھلاڑیوں کی دو ٹیم بنائیں اور ان کا میچ کروائیںاور ان ٹیموں کے جھنڈے اور لوگوبنوائیں اور ہو سکے تو ان لوگوز کے فرضی خاکے بھی بنوائیں جائیں جو میچ کے دن کھلاڑیوں کے ہمراہ ہوں اور ان میچوں کے انعقادکالجوں میں بھی ہو تاکہ وہاں کے طلباء بھی اس میچ سے لطف اندوز ہوں اور ان کو پڑھائی کے ساتھ ساتھ ایک اچھی اور صحت افزاء تفریح دیکھنے کو ملے۔ اس موقع پر ڈائریکٹر سپورٹس نے وائس چانسلر کو نومبر میں شرو ع ہونیوالے انٹرورسٹی ٹورنامنٹ کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کیا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 16 days ago
لاء کالج میں داخلہ کیلئے طلباء ایل اے ٹی ٹیسٹ 16اکتوبر2020(جمعتہ المبارک) تک جمع کروادیں ' تاکہ لاء کالج کا فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے' وائس چانسلر گومل یونیورسٹی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ13اکتوبر 2020) گومل یونیورسٹی میں جاری مختلف شعبہ جات کے داخلوں میں شفافیت پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا' حقدار کو اس کا حق ملے گا۔ان خیالات کا اظہار گومل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے ایڈمیشن کے حوالے سے منعقدہ تمام شعبہ جات کے ڈین ، ڈائریکٹرز اور سربراہان کے اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کے دوران کیا۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ نئے شروع ہونیوالی کلاسوں میں سربراہان اساتذہ پر سختی کریں کہ وہ طلباء کو معیاری کتابوں سے پڑھائیں اور نوٹس کے رواج کو ختم کریں تاکہ طلباء میں کتابوں سے پڑھنے کا رجحان پیدا ہو ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہماری تعلیمی ماحول سے دوری کا اصل سبب کتاب بینی سے دور ی ہے۔ کتاب بینی کو طلباء میں اجاگر کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔وائس چانسلر نے ایڈمیشن آفس کو لاء کالج کے داخلوں کو فوری طور پر روکنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ کچھ طلباء نے ابھی تک ایل اے ٹی ٹیسٹ کے نتائج جمع نہیں کروائے ۔ لہٰذاتمام طلباء فوری طور پر جلد از جلد اپنے نتائج 16 اکتوبر 2020 بروز جمعتہ المبارک تک ایڈمیشن آفس میں جمع کروادیں۔ تاکہ فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے اور کسی کے ساتھ کسی قسم کی کوئی حق تلفی نہ ہو۔16اکتوبر2020 کے بعد لاء میں ایڈمیشن نہ ہونے کی ذمہ دار گومل یونیورسٹی نہیں ہو گی ۔وائس چانسلر نے ٹائم ٹیبل کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ تمام اساتذہ نے ہفتہ میں40گھنٹے اپنی ڈیوٹی سر انجام دینی ہے۔ جس کو یقینی بنانا ڈین اور سربراہان کی ذمہ داری ہے ۔ جن اساتذہ کی کلاس جس ٹائم ہیں وہ اپنے مقررہ وقت میں اس کلاس میں طلباء کو پڑھائیں۔ بوجہ ایمرجنسی اپنے متعلقہ سربراہ کی اجازت سے اپنی کلاس کسی دوسرے استاد کواپنی کلاس دے دیں۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ایم فل کے طلباء کے کورس ورک کوپہلے سال میں ختم کیا جائے گاجبکہ دوسرے سال اس کی ریسرچ کو ختم کیا جائے تاکہ طلباء کے قیمتی وقت کو ضائع ہونے سے بچایا جا سکے۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات نے وائس چانسلر کو اپنے شعبہ جات میں ہونیوالے داخلوںکی تفصیل سے بھی آگاہ کیا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 16 days ago
لاء کالج میں داخلہ کیلئے طلباء ایل اے ٹی ٹیسٹ 16اکتوبر2020(جمعتہ المبارک) تک جمع کروادیں ' تاکہ لاء کالج کا فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے' وائس چانسلر گومل یونیورسٹی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ13اکتوبر 2020) گومل یونیورسٹی میں جاری مختلف شعبہ جات کے داخلوں میں شفافیت پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا' حقدار کو اس کا حق ملے گا۔ان خیالات کا اظہار گومل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے ایڈمیشن کے حوالے سے منعقدہ تمام شعبہ جات کے ڈین ، ڈائریکٹرز اور سربراہان کے اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کے دوران کیا۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ نئے شروع ہونیوالی کلاسوں میں سربراہان اساتذہ پر سختی کریں کہ وہ طلباء کو معیاری کتابوں سے پڑھائیں اور نوٹس کے رواج کو ختم کریں تاکہ طلباء میں کتابوں سے پڑھنے کا رجحان پیدا ہو ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہماری تعلیمی ماحول سے دوری کا اصل سبب کتاب بینی سے دور ی ہے۔ کتاب بینی کو طلباء میں اجاگر کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔وائس چانسلر نے ایڈمیشن آفس کو لاء کالج کے داخلوں کو فوری طور پر روکنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ کچھ طلباء نے ابھی تک ایل اے ٹی ٹیسٹ کے نتائج جمع نہیں کروائے ۔ لہٰذاتمام طلباء فوری طور پر جلد از جلد اپنے نتائج 16 اکتوبر 2020 بروز جمعتہ المبارک تک ایڈمیشن آفس میں جمع کروادیں۔ تاکہ فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے اور کسی کے ساتھ کسی قسم کی کوئی حق تلفی نہ ہو۔16اکتوبر2020 کے بعد لاء میں ایڈمیشن نہ ہونے کی ذمہ دار گومل یونیورسٹی نہیں ہو گی ۔وائس چانسلر نے ٹائم ٹیبل کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ تمام اساتذہ نے ہفتہ میں40گھنٹے اپنی ڈیوٹی سر انجام دینی ہے۔ جس کو یقینی بنانا ڈین اور سربراہان کی ذمہ داری ہے ۔ جن اساتذہ کی کلاس جس ٹائم ہیں وہ اپنے مقررہ وقت میں اس کلاس میں طلباء کو پڑھائیں۔ بوجہ ایمرجنسی اپنے متعلقہ سربراہ کی اجازت سے اپنی کلاس کسی دوسرے استاد کواپنی کلاس دے دیں۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ایم فل کے طلباء کے کورس ورک کوپہلے سال میں ختم کیا جائے گاجبکہ دوسرے سال اس کی ریسرچ کو ختم کیا جائے تاکہ طلباء کے قیمتی وقت کو ضائع ہونے سے بچایا جا سکے۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات نے وائس چانسلر کو اپنے شعبہ جات میں ہونیوالے داخلوںکی تفصیل سے بھی آگاہ کیا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 16 days ago
لاء کالج میں داخلہ کیلئے طلباء ایل اے ٹی ٹیسٹ 16اکتوبر2020(جمعتہ المبارک) تک جمع کروادیں ' تاکہ لاء کالج کا فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے' وائس چانسلر گومل یونیورسٹی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ13اکتوبر 2020) گومل یونیورسٹی میں جاری مختلف شعبہ جات کے داخلوں میں شفافیت پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا' حقدار کو اس کا حق ملے گا۔ان خیالات کا اظہار گومل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے ایڈمیشن کے حوالے سے منعقدہ تمام شعبہ جات کے ڈین ، ڈائریکٹرز اور سربراہان کے اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کے دوران کیا۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ نئے شروع ہونیوالی کلاسوں میں سربراہان اساتذہ پر سختی کریں کہ وہ طلباء کو معیاری کتابوں سے پڑھائیں اور نوٹس کے رواج کو ختم کریں تاکہ طلباء میں کتابوں سے پڑھنے کا رجحان پیدا ہو ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہماری تعلیمی ماحول سے دوری کا اصل سبب کتاب بینی سے دور ی ہے۔ کتاب بینی کو طلباء میں اجاگر کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔وائس چانسلر نے ایڈمیشن آفس کو لاء کالج کے داخلوں کو فوری طور پر روکنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ کچھ طلباء نے ابھی تک ایل اے ٹی ٹیسٹ کے نتائج جمع نہیں کروائے ۔ لہٰذاتمام طلباء فوری طور پر جلد از جلد اپنے نتائج 16 اکتوبر 2020 بروز جمعتہ المبارک تک ایڈمیشن آفس میں جمع کروادیں۔ تاکہ فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے اور کسی کے ساتھ کسی قسم کی کوئی حق تلفی نہ ہو۔16اکتوبر2020 کے بعد لاء میں ایڈمیشن نہ ہونے کی ذمہ دار گومل یونیورسٹی نہیں ہو گی ۔وائس چانسلر نے ٹائم ٹیبل کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ تمام اساتذہ نے ہفتہ میں40گھنٹے اپنی ڈیوٹی سر انجام دینی ہے۔ جس کو یقینی بنانا ڈین اور سربراہان کی ذمہ داری ہے ۔ جن اساتذہ کی کلاس جس ٹائم ہیں وہ اپنے مقررہ وقت میں اس کلاس میں طلباء کو پڑھائیں۔ بوجہ ایمرجنسی اپنے متعلقہ سربراہ کی اجازت سے اپنی کلاس کسی دوسرے استاد کواپنی کلاس دے دیں۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ایم فل کے طلباء کے کورس ورک کوپہلے سال میں ختم کیا جائے گاجبکہ دوسرے سال اس کی ریسرچ کو ختم کیا جائے تاکہ طلباء کے قیمتی وقت کو ضائع ہونے سے بچایا جا سکے۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات نے وائس چانسلر کو اپنے شعبہ جات میں ہونیوالے داخلوںکی تفصیل سے بھی آگاہ کیا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 16 days ago
لاء کالج میں داخلہ کیلئے طلباء ایل اے ٹی ٹیسٹ 16اکتوبر2020(جمعتہ المبارک) تک جمع کروادیں ' تاکہ لاء کالج کا فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے' وائس چانسلر گومل یونیورسٹی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ13اکتوبر 2020) گومل یونیورسٹی میں جاری مختلف شعبہ جات کے داخلوں میں شفافیت پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا' حقدار کو اس کا حق ملے گا۔ان خیالات کا اظہار گومل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے ایڈمیشن کے حوالے سے منعقدہ تمام شعبہ جات کے ڈین ، ڈائریکٹرز اور سربراہان کے اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کے دوران کیا۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ نئے شروع ہونیوالی کلاسوں میں سربراہان اساتذہ پر سختی کریں کہ وہ طلباء کو معیاری کتابوں سے پڑھائیں اور نوٹس کے رواج کو ختم کریں تاکہ طلباء میں کتابوں سے پڑھنے کا رجحان پیدا ہو ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہماری تعلیمی ماحول سے دوری کا اصل سبب کتاب بینی سے دور ی ہے۔ کتاب بینی کو طلباء میں اجاگر کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔وائس چانسلر نے ایڈمیشن آفس کو لاء کالج کے داخلوں کو فوری طور پر روکنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ کچھ طلباء نے ابھی تک ایل اے ٹی ٹیسٹ کے نتائج جمع نہیں کروائے ۔ لہٰذاتمام طلباء فوری طور پر جلد از جلد اپنے نتائج 16 اکتوبر 2020 بروز جمعتہ المبارک تک ایڈمیشن آفس میں جمع کروادیں۔ تاکہ فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے اور کسی کے ساتھ کسی قسم کی کوئی حق تلفی نہ ہو۔16اکتوبر2020 کے بعد لاء میں ایڈمیشن نہ ہونے کی ذمہ دار گومل یونیورسٹی نہیں ہو گی ۔وائس چانسلر نے ٹائم ٹیبل کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ تمام اساتذہ نے ہفتہ میں40گھنٹے اپنی ڈیوٹی سر انجام دینی ہے۔ جس کو یقینی بنانا ڈین اور سربراہان کی ذمہ داری ہے ۔ جن اساتذہ کی کلاس جس ٹائم ہیں وہ اپنے مقررہ وقت میں اس کلاس میں طلباء کو پڑھائیں۔ بوجہ ایمرجنسی اپنے متعلقہ سربراہ کی اجازت سے اپنی کلاس کسی دوسرے استاد کواپنی کلاس دے دیں۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ایم فل کے طلباء کے کورس ورک کوپہلے سال میں ختم کیا جائے گاجبکہ دوسرے سال اس کی ریسرچ کو ختم کیا جائے تاکہ طلباء کے قیمتی وقت کو ضائع ہونے سے بچایا جا سکے۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات نے وائس چانسلر کو اپنے شعبہ جات میں ہونیوالے داخلوںکی تفصیل سے بھی آگاہ کیا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 16 days ago
لاء کالج میں داخلہ کیلئے طلباء ایل اے ٹی ٹیسٹ 16اکتوبر2020(جمعتہ المبارک) تک جمع کروادیں ' تاکہ لاء کالج کا فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے' وائس چانسلر گومل یونیورسٹی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ13اکتوبر 2020) گومل یونیورسٹی میں جاری مختلف شعبہ جات کے داخلوں میں شفافیت پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا' حقدار کو اس کا حق ملے گا۔ان خیالات کا اظہار گومل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے ایڈمیشن کے حوالے سے منعقدہ تمام شعبہ جات کے ڈین ، ڈائریکٹرز اور سربراہان کے اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کے دوران کیا۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ نئے شروع ہونیوالی کلاسوں میں سربراہان اساتذہ پر سختی کریں کہ وہ طلباء کو معیاری کتابوں سے پڑھائیں اور نوٹس کے رواج کو ختم کریں تاکہ طلباء میں کتابوں سے پڑھنے کا رجحان پیدا ہو ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہماری تعلیمی ماحول سے دوری کا اصل سبب کتاب بینی سے دور ی ہے۔ کتاب بینی کو طلباء میں اجاگر کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔وائس چانسلر نے ایڈمیشن آفس کو لاء کالج کے داخلوں کو فوری طور پر روکنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ کچھ طلباء نے ابھی تک ایل اے ٹی ٹیسٹ کے نتائج جمع نہیں کروائے ۔ لہٰذاتمام طلباء فوری طور پر جلد از جلد اپنے نتائج 16 اکتوبر 2020 بروز جمعتہ المبارک تک ایڈمیشن آفس میں جمع کروادیں۔ تاکہ فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے اور کسی کے ساتھ کسی قسم کی کوئی حق تلفی نہ ہو۔16اکتوبر2020 کے بعد لاء میں ایڈمیشن نہ ہونے کی ذمہ دار گومل یونیورسٹی نہیں ہو گی ۔وائس چانسلر نے ٹائم ٹیبل کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ تمام اساتذہ نے ہفتہ میں40گھنٹے اپنی ڈیوٹی سر انجام دینی ہے۔ جس کو یقینی بنانا ڈین اور سربراہان کی ذمہ داری ہے ۔ جن اساتذہ کی کلاس جس ٹائم ہیں وہ اپنے مقررہ وقت میں اس کلاس میں طلباء کو پڑھائیں۔ بوجہ ایمرجنسی اپنے متعلقہ سربراہ کی اجازت سے اپنی کلاس کسی دوسرے استاد کواپنی کلاس دے دیں۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ایم فل کے طلباء کے کورس ورک کوپہلے سال میں ختم کیا جائے گاجبکہ دوسرے سال اس کی ریسرچ کو ختم کیا جائے تاکہ طلباء کے قیمتی وقت کو ضائع ہونے سے بچایا جا سکے۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات نے وائس چانسلر کو اپنے شعبہ جات میں ہونیوالے داخلوںکی تفصیل سے بھی آگاہ کیا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 16 days ago
لاء کالج میں داخلہ کیلئے طلباء ایل اے ٹی ٹیسٹ 16اکتوبر2020(جمعتہ المبارک) تک جمع کروادیں ' تاکہ لاء کالج کا فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے' وائس چانسلر گومل یونیورسٹی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ13اکتوبر 2020) گومل یونیورسٹی میں جاری مختلف شعبہ جات کے داخلوں میں شفافیت پر کسی قسم کا سمجھوتہ نہیں کیا جائیگا' حقدار کو اس کا حق ملے گا۔ان خیالات کا اظہار گومل یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے ایڈمیشن کے حوالے سے منعقدہ تمام شعبہ جات کے ڈین ، ڈائریکٹرز اور سربراہان کے اعلیٰ سطحی اجلاس سے خطاب کے دوران کیا۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ نئے شروع ہونیوالی کلاسوں میں سربراہان اساتذہ پر سختی کریں کہ وہ طلباء کو معیاری کتابوں سے پڑھائیں اور نوٹس کے رواج کو ختم کریں تاکہ طلباء میں کتابوں سے پڑھنے کا رجحان پیدا ہو ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہماری تعلیمی ماحول سے دوری کا اصل سبب کتاب بینی سے دور ی ہے۔ کتاب بینی کو طلباء میں اجاگر کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے ۔وائس چانسلر نے ایڈمیشن آفس کو لاء کالج کے داخلوں کو فوری طور پر روکنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ کچھ طلباء نے ابھی تک ایل اے ٹی ٹیسٹ کے نتائج جمع نہیں کروائے ۔ لہٰذاتمام طلباء فوری طور پر جلد از جلد اپنے نتائج 16 اکتوبر 2020 بروز جمعتہ المبارک تک ایڈمیشن آفس میں جمع کروادیں۔ تاکہ فائنل میرٹ مکمل کیا جا سکے اور کسی کے ساتھ کسی قسم کی کوئی حق تلفی نہ ہو۔16اکتوبر2020 کے بعد لاء میں ایڈمیشن نہ ہونے کی ذمہ دار گومل یونیورسٹی نہیں ہو گی ۔وائس چانسلر نے ٹائم ٹیبل کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ تمام اساتذہ نے ہفتہ میں40گھنٹے اپنی ڈیوٹی سر انجام دینی ہے۔ جس کو یقینی بنانا ڈین اور سربراہان کی ذمہ داری ہے ۔ جن اساتذہ کی کلاس جس ٹائم ہیں وہ اپنے مقررہ وقت میں اس کلاس میں طلباء کو پڑھائیں۔ بوجہ ایمرجنسی اپنے متعلقہ سربراہ کی اجازت سے اپنی کلاس کسی دوسرے استاد کواپنی کلاس دے دیں۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ایم فل کے طلباء کے کورس ورک کوپہلے سال میں ختم کیا جائے گاجبکہ دوسرے سال اس کی ریسرچ کو ختم کیا جائے تاکہ طلباء کے قیمتی وقت کو ضائع ہونے سے بچایا جا سکے۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات نے وائس چانسلر کو اپنے شعبہ جات میں ہونیوالے داخلوںکی تفصیل سے بھی آگاہ کیا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 21 days ago
وزیرستان کا علاقہ جغرافیائی لحاظ سے نہایت اہمیت کا حامل ہے جس میں چھپی ہوئی اشیاء کے بارے میں تحقیق وقت کی اہم ضرورت ہے ' مقررین کا وزیرستان میں بائیوڈائیورسٹی کے حوالے سے گومل یونیورسٹی میں پہلے قومی مشاورتی اجلاس سے خطاب
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ06اکتوبر 2020) گومل یونیورسٹی میں وزیرستان کے علاقہ میں بائیو ڈائیورسٹی کے حوالے سے پہلے قومی مشاورتی اجلاس کا انعقاد کیا گیا۔ اجلاس کی صدارت پروفیسر ڈاکٹرطاہرعرفان خان، وائس چانسلر ایبٹ آباد یونیورسٹی نے کی جبکہ ان کے ہمراہ پروفیسر ڈاکٹر جوہر علی خان ،وائس چانسلر خوشحال خان خٹک یونیورسٹی کرک، پروفیسر ڈاکٹر خان بہادر'سابق وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی پشاور، پروفیسر ڈاکٹر حبیب احمد،سابق وائس چانسلر اسلامیہ کالج پشاور ،پروفیسر ڈاکٹر سلطان محمود، وائس چانسلر یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی بنوں،پروفیسر ڈاکٹر مسرور الٰہی بابر،وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی ڈیرہ اسماعیل خان ،پروفیسر ڈاکٹر امیر خان یونیورسٹی آف پشاور ' پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد ، وائس چانسلر گومل یونیورسٹی سمیت خان ملوک خان، ڈی ایف او وائلڈ لائف ڈیرہ بھی موجودتھے۔ میٹنگ میں وزیرستان کے پہاڑی علاقوں میں نباتات، حیوانات کی اہمیت و افادیت کے بارے میں تفصیلی بات چیت کرتے ہوئے معزز مہمانوں نے کہا کہ وزیرستان کا علاقہ جغرافیائی لحاظ سے نہایت اہمیت کا حامل ہے جس میں چھپی ہوئی اشیاء کے بارے میں تحقیق وقت کی اہم ضرورت ہے ' انہوں نے مزید کہا کہ یہاں پر بے شمار چیزوں کی ابھی تک شناخت بھی نہیں ہوسکی جس کی تشخیص بہت ضروری ہے ایسا نہ ہو کہ یہ چیزیں تشخیص سے پہلے ہی ختم ہو جائیں اور ہم ان سے فائدہ نہ اٹھا سکیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی ڈیرہ سمیت لکی یونیورسٹی، بنوں یونیورسٹی اور کرک یونیورسٹی کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ اس علاقے میں ریسرچ کریں ۔ تاکہ ہم بہت سی چھپی ہوئی چیزوں کی دریافت کرکے ان سے فائدہ اٹھا سکیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ابھی تک ہم صرف ایک چلغوزہ ہی برآمد کررہے ہیں اگر یہ علاقہ چین کے پاس ہوتا تو وہ یہاں سے ہزاروں اشیاء کی برآمدات کررہے ہوتے ۔ معزز مہمانوں نے مشاورتی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ یہاں پر کرومائیٹ کے ذخائر موجود ہیں مگر عدم توجہی کی وجہ سے یہ تمام ضائع ہو رہے ہیں ۔اجلاس کے اختتام پر وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 28 days ago
گومل یونیورسٹی میںوزیرستان کے پہاڑی سلسلے کے حیاتیاتی تنوع کے حوالے سے پہلی قومی مشاورتی اجلاس کا انعقاد06اکتوبرکوہوگا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ30ستمبر 2020) وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمدکی ہدایت پر گومل یونیورسٹی میں06اکتوبر2020کووزیرستان کے پہاڑی سلسلے کے حیاتیاتی تنوع کے حوالے سے پہلی قومی مشاورتی اجلاس کا انعقاد کروایا جا رہا ہے ۔جس کی فوکل پرسن چیئرپرسن شعبہ بائیولاجیکل سائنسزڈاکٹر عاصمہ سعید کو بنایا گیا ہے۔ اس میٹنگ میں جنوبی وزیرستان میں جتنے بھی نباتات اور حیوانات ہیںان کے حیاتی تنوع کے بارے میں آگاہی دی جائے گی۔ میٹنگ میںپاکستان کے مایہ ناز سائنسدان اور اعلیٰ تعلیم کے ماہر سابق وائس چانسلر یونیورسٹی آف کراچی پروفیسر ڈاکٹر محمد قیصر، سابق وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی پشاور پروفیسر ڈاکٹرخان بہادر مروت، سابق وائس چانسلر اسلامیہ پشاور پروفیسر ڈاکٹر حبیب احمد، سابق وائس چانسلر کوہاٹ یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی پروفیسر ڈاکٹر ضابطہ خان شنواری ، وائس چانسلر شیخ ایاز یونیورسٹی شکارپور پروفیسر ڈاکٹرغلام رضا بھٹی اور یونیورسٹی آف پشاور کے پروفیسر ڈاکٹر امیر خان شرکت کریںگے۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 29 days ago
گومل یونیورسٹی کی 105ویں سنڈیکیٹ میٹنگ میں فیسیں نہ بڑھانے کا فیصلہ
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'29ستمبر2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی زیر صدارت گومل یونیورسٹی کی 105 ویں سنڈیکیٹ میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔ جس میں سنڈیکیٹ ممبرا ن نے شرکت کی۔میٹنگ میں ایچ ای سی قوانین کی رو سے ایسوسی ایٹ ڈگری کو اکیڈمک کونسل کی سفارشات پر سنڈیکیٹ نے منظور کرلیا۔کورونا وائرس کی وجہ سے گومل یونیورسٹی کی فیسوںکو جو کہ یونیورسٹی قوانین کے مطابق بڑھانا تھا میںکسی قسم کا کوئی اضافہ نہیں کیا گیا۔ جو اس سے پہلے ہر سال 10فیصد کی بنیاد پر کیا جاتا تھا۔میٹنگ میں وینسم کالج کی اراضی کے تقریباً50سال پرانے ملکیتی دستاویزات کو ڈھونڈنکالنے پر جسٹس(ر)محمد دائودخان اور ڈپٹی رجسٹرار لیگل سیل محمد سراج خان کی کارکردگی کو سراہا گیا جن کی شبانہ روز محنت کی وجہ سے یونیورسٹی اپنی اربوں روپے کی قیمتی اراضی سے محروم ہونے سے بچ گئی۔ان دستاویزات کو بھی میٹنگ میں ایجنڈے کا حصہ بنایا گیا۔ میٹنگ میں مختلف نوعیت کے کیسوں پر کمیٹیاں بھی بنائی گئیں۔وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ گومل یونیورسٹی میں اکیڈمک اور ریسرچ کو بہتر بنانے کیلئے اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ عالمی وباء کورونا وائرس کی وجہ سے والدین کی معاشی حالت کو دیکھتے ہوئے اس دفعہ گومل یونیورسٹی کی فیسوں میں کسی بھی قسم کا اضافہ نہیں کیا جارہاہے ۔واضح رہے کہ میٹنگ میں ایجنڈا آئٹم زیادہ ہونے کی وجہ سے میٹنگ کو دو دن تک محیط کیا گیا جس میں جسٹس(ر) محمد دائود،رجسٹرار طارق محمود، ڈائریکٹر فنانس اقبال اعوان، ڈین فیکلٹی آف سائنسز و فارمیسی پروفیسر ڈاکٹر حلیم شاہ ،ڈین زرعی فیکلٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی، ڈین فیکلٹی آف آرٹس پروفیسر ڈاکٹر نعمت اللہ بابر، ایسوسی ایٹ پروفیسر فیکلٹی آف ایگریکلچر ڈاکٹر محمد اقبال، اسسٹنٹ پروفیسر شعبہ انسٹیٹیوٹ آف کیمیکل سائنسز ڈاکٹر محمد عدیل ،نمائندہ ہائیر ایجوکیشن کمیشن اسلام آباد پروفیسر ڈاکٹر زاہد انور، نمائندہ ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پشاور ڈپٹی سیکرٹری ندیم اختر، نمائندہ اسٹیبلشمنٹ سیکشن ڈپٹی سیکرٹری حبیب الحسن گیلانی، نمائندہ فنانس ڈیپارٹمنٹ ڈپٹی سیکرٹری محمد فاروق، پرنسپل ڈگری کالج درابن محمد شکیل ملک،پرنسپل گورنمنٹ گرلز ڈگری کالج نمبر1مسز شفقت یاسمین ،لیکچررشعبہ بزن
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 31 days ago
گومل یونیورسٹی کے مختلف شعبہ جات میں ایم فل اور پی ایچ ڈی داخلوں کیلئے انٹری ٹیسٹ کا انعقاد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ27ستمبر 2020)گومل یونیورسٹی کے مختلف شعبہ جات میں ایم فل اور پی ایچ ڈی داخلوں کیلئے نیشنل ٹیسٹنگ سروس (این ٹی ایس) کے تعاون سے انٹری ٹیسٹ کاانعقاد وینسم کالج میں کیا گیا ۔ اس موقع پر ڈائریکٹر ایڈمیشن پروفیسر ڈاکٹر محمد صدیق، پرنسپل وینسم کالج پروفیسر ڈاکٹر محمد سعید سمیت دیگر افسران بھی موجود تھے۔ گومل یونیورسٹی کے مختلف شعبہ جات میں ایم فل کیلئے 1361جبکہ پی ایچ ڈی کیلئے 294طلبہ و طالبات نے انٹری ٹیسٹ میں حصہ لیا ۔ تعداد زیادہ ہونے کی وجہ سے داخلہ ٹیسٹ کو تین حصوںمیں تقسیم کیا گیا ۔واضح رہے کہ گزشتہ سال گومل یونیورسٹی میں ایم فل کیلئے479جبکہ پی ایچ ڈی کیلئے 98طلباء وطالبات نے داخلے کیلئے ٹیسٹ میں حصہ لیا تھا۔جو کہ موجودہ سال کے ایم فل اور پی ایچ ڈی ایڈمیشن داخلہ ٹیسٹ کی تعداد سے تین گناہ کم ہے۔ انٹری ٹیسٹ میں پاس ہونیوالے طلبہ وطالبات کے انٹرویو اور نئی کلاسوں کااجراء گومل یونیورسٹی ایڈمیشن آفس کے جاری کردہ شیڈول کے مطابق ہونگے۔ ٹیسٹ میں بجلی کی لوڈشیڈنگ کے باعث طلباء کیلئے جنریٹرز کی سہولت بھی مہیا کی گئی تھی اور اس موقع پر سیکیورٹی کے بھی سخت انتظامات کئے تھے۔ طلباء کے ساتھ آنیوالے ان کے والدین اور رشتہ داروں نے گومل یونیورسٹی انتظامیہ کے کاموں کو سراہا اور ان پر تسلی کا اظہار کیا ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 33 days ago
گومل یونیورسٹی نے ملحقہ کالجوں میں ایسوسی ایٹ ڈگری کا نفاذ کر دیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ25ستمبر 2020) وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی زیر صدارت 33ویں اکیڈمک کونسل میٹنگ کا انعقاد کیا گیا ۔اس موقع پر تمام شعبہ جات کے ڈین، رجسٹراراور دیگر ممبران بھی موجود تھے۔ میٹنگ کا ایجنڈا ڈائریکٹر گریجویٹ اسٹڈیز اینڈ ریسرچ پروفیسر ڈاکٹر نعمت اللہ بابر نے ممبران کے سامنے پیش کیا ۔میٹنگ میں ایچ ای سی قوانین کی روسے پورے ملک میں سب سے پہلے گومل یونیورسٹی میں ایسوسی ایٹ ڈگری کے نفاذ کا فیصلہ کیاگیا ۔وائس چانسلر ڈاکٹرافتخار احمد نے ایسوسی ایٹ ڈگری کے نفاذ کے حوالے سے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ گومل یونیورسٹی سے ملحقہ کالجوں میں طلباء ایف اے /ایف ایس سی کے بعد دو سالہ ایسوسی ایٹ ڈگری میں داخلہ لیں گے اور دو سال مکمل ہونے کے بعد ان کو ایسوسی ایٹ کی ڈگری دیدی جائیگی اس کے ساتھ ساتھ وہ طلباء جو مزید تعلیم حاصل کے خواہش مند ہوں گے ان کو گومل یونیورسٹی میں بی ایس کے تیسرے سال میں داخلہ دیدیا جائیگا اور انہیں چار سالہ بی ایس کی ڈگری دی جائیگی۔ وائس چانسلر نے ایسوسی ایٹ ڈگری کے متعلق تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ طلباء کو گومل یونیورسٹی کی مجاز باڈیزسے منظور شدہ کسی بھی بی ایس پروگرام میں پہلے دو سال کے کورسز پڑھنا ہونگے اور پہلے سمسٹر کے مکمل ہونے پر سمسٹر میں کسی بھی وقت طلباء کواپنے کورس کے مطابق 9ہفتہ کی انٹرن شپ کرنا ہوگی یا پھر 360گھنٹے اپنے متعلقہ کورس کے مطابق کسی بھی ادارے کے ساتھ کام کرنا ہوگا اور اسی طرح ایسوسی ایٹ ڈگری میں پریکٹیکل لرننگ لیب بھی اسکا حصہ ہونگی۔ جس میں طلباء کو دو سمسٹر کے دوران ہفتہ میں چار گھنٹے ،انٹرپرینورشپ، یوتھ کلب یا سپورٹس جیسی مثبت سرگرمیوں میں سے کسی ایک میں لازمی حصہ لینگے۔ اس حوالے سے گومل یونیورسٹی کے ڈپٹی رجسٹرار اکیڈمکس نے ایک تفصیلی نوٹیفیکیشن نمبر483-90/DRA/GU مورخہ23ستمبر2020کو جاری کیا جس میں ایسوسی ایٹ ڈگری کے حوالے سے تمام تر تفصیل بھی درج ہے۔ وائس چانسلر نے مزیدکہا کہ یونیورسٹی انتظامیہ کو دیکھنا ہوتا ہے کہ یونیورسٹی کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کیلئے کیا ضروری ہے اور کیا نہیں۔ انشاء اللہ اگلا سال گومل یونیورسٹی کیلئے خوش آئند ہو گا ۔اکیڈمک کونسل کی میٹنگ میں ایم فل اور پی ایچ ڈی کرنیوالے گومل یونیورسٹی ملازمین کو ا
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 33 days ago
گومل یونیورسٹی نے ملحقہ کالجوں میں ایسوسی ایٹ ڈگری کا نفاذ کر دیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ25ستمبر 2020) وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی زیر صدارت 33ویں اکیڈمک کونسل میٹنگ کا انعقاد کیا گیا ۔اس موقع پر تمام شعبہ جات کے ڈین، رجسٹراراور دیگر ممبران بھی موجود تھے۔ میٹنگ کا ایجنڈا ڈائریکٹر گریجویٹ اسٹڈیز اینڈ ریسرچ پروفیسر ڈاکٹر نعمت اللہ بابر نے ممبران کے سامنے پیش کیا ۔میٹنگ میں ایچ ای سی قوانین کی روسے پورے ملک میں سب سے پہلے گومل یونیورسٹی میں ایسوسی ایٹ ڈگری کے نفاذ کا فیصلہ کیاگیا ۔وائس چانسلر ڈاکٹرافتخار احمد نے ایسوسی ایٹ ڈگری کے نفاذ کے حوالے سے تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ گومل یونیورسٹی سے ملحقہ کالجوں میں طلباء ایف اے /ایف ایس سی کے بعد دو سالہ ایسوسی ایٹ ڈگری میں داخلہ لیں گے اور دو سال مکمل ہونے کے بعد ان کو ایسوسی ایٹ کی ڈگری دیدی جائیگی اس کے ساتھ ساتھ وہ طلباء جو مزید تعلیم حاصل کے خواہش مند ہوں گے ان کو گومل یونیورسٹی میں بی ایس کے تیسرے سال میں داخلہ دیدیا جائیگا اور انہیں چار سالہ بی ایس کی ڈگری دی جائیگی۔ وائس چانسلر نے ایسوسی ایٹ ڈگری کے متعلق تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ طلباء کو گومل یونیورسٹی کی مجاز باڈیزسے منظور شدہ کسی بھی بی ایس پروگرام میں پہلے دو سال کے کورسز پڑھنا ہونگے اور پہلے سمسٹر کے مکمل ہونے پر سمسٹر میں کسی بھی وقت طلباء کواپنے کورس کے مطابق 9ہفتہ کی انٹرن شپ کرنا ہوگی یا پھر 360گھنٹے اپنے متعلقہ کورس کے مطابق کسی بھی ادارے کے ساتھ کام کرنا ہوگا اور اسی طرح ایسوسی ایٹ ڈگری میں پریکٹیکل لرننگ لیب بھی اسکا حصہ ہونگی۔ جس میں طلباء کو دو سمسٹر کے دوران ہفتہ میں چار گھنٹے ،انٹرپرینورشپ، یوتھ کلب یا سپورٹس جیسی مثبت سرگرمیوں میں سے کسی ایک میں لازمی حصہ لینگے۔ اس حوالے سے گومل یونیورسٹی کے ڈپٹی رجسٹرار اکیڈمکس نے ایک تفصیلی نوٹیفیکیشن نمبر483-90/DRA/GU مورخہ23ستمبر2020کو جاری کیا جس میں ایسوسی ایٹ ڈگری کے حوالے سے تمام تر تفصیل بھی درج ہے۔ وائس چانسلر نے مزیدکہا کہ یونیورسٹی انتظامیہ کو دیکھنا ہوتا ہے کہ یونیورسٹی کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کیلئے کیا ضروری ہے اور کیا نہیں۔ انشاء اللہ اگلا سال گومل یونیورسٹی کیلئے خوش آئند ہو گا ۔اکیڈمک کونسل کی میٹنگ میں ایم فل اور پی ایچ ڈی کرنیوالے گومل یونیورسٹی ملازمین کو ا
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 43 days ago
اکیڈمکس اورریسرچ کی بہتری سے ہی تعلیمی ادارے ترقی کی راہ پر گامزن ہوتے ہیں'وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ15ستمبر 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی زیر صدارت 171ویں ایڈوانسڈ سٹڈیز اینڈ ریسرچ بورڈ کی میٹنگ کا انعقاد کیا گیا اس موقع پر تمام شعبہ جات کے ڈین سمیت دیگر ممبران بھی شریک تھے۔میٹنگ سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر افتخار احمد نے کہا کہ ہمارا کام اکیڈمکس اور ریسرچ کو بہتر کرنا ہے کیونکہ اکیڈمکس اورریسرچ کی بہتری سے ہی تعلیمی ادارے ترقی کی راہ پر گامزن ہوتے ہیں۔ وائس چانسلر نے کہا کہ آئندہ بورڈ آف ایڈوانسڈ سٹڈیز اینڈ ریسرچ کی میٹنگ میں ایم فل اور پی ایچ ڈی کے سائیناپسز کی منظوری کیلئے طلباء خود آئینگے اور اپنی سائیناپسز کا دفاع کرینگے اس موقع پر ان کے سپروائرز بھی ان کے ہمراہ لازمی ہونگے اور اگر ضرورت پڑی تو اس کیلئے ایک ماہ میں دو دفعہ بورڈ آف ایڈوانسڈ سٹڈیز اینڈ ریسرچ کی میٹنگ کا انعقاد بھی کروایا جائیگا۔ میٹنگ میں اکیڈمکس کی بہتری اور ایم فل /پی ایچ ڈی کی بہتری کیلئے مختلف کمیٹیاں بھی تشکیل دی گئیں۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 48 days ago
خیبرپختونخوا میں ہائیر ایجوکیشن کی کامیابی کا سہرا وزیراعظم عمران خان کے سر ہے' وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ،11ستمبر2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمدنے صوبہ خیبرپختونخوا کی اکیڈمک کمیونٹی کی طرف سے وزیراعظم پاکستان عمران خان کا اکیڈمک کی بہتری کیلئے خصوصی وقت دینے پر شکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کا صوبہ میں تعلیم کی بہتری اور فروغ کے حوالے سے اعلیٰ سطحی اجلاس کا انعقاد ان کے اعلیٰ تعلیم کے فروغ کے ویژن کی عکاسی کرتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ اس اہم اجلاس کے انعقاد میں پروفیسر ڈاکٹر عطاء الرحمن کاکردار قابل تحسین ہے۔ جن کی کاوشوں کے باعث وزیراعظم پاکستان نے اس اہم اجلاس کی صدارت کی۔ ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ اس اہم اجلاس کے انعقاد پر ہم وزیراعظم پاکستان عمران خان کے مشکور ہیں اور انشاء اللہ وزیراعظم کے فروغ تعلیم کے ویژن کوپروان چڑھانے میں کوئی دقیقہ فروگزاشت نہیں کرینگے ۔ اس موقع پروائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے گورنر خیبرپختونخوا شاہ فرمان، وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان، وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر شبلی فراز،وفاقی وزیر تعلیم شفقت محمود،چیئر مین ہائیر ایجوکیشن کمیشن ڈاکٹر طارق بنوری،چیف سیکرٹری خیبرپختونخواکاظم نیاز ،وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا کے مشیربرائے ہائیر ایجوکیشن خلیق الرحمن سمیت پروفیسر ڈاکٹر عطاء الرحمن و دیگر کا اس کامیاب میٹنگ کے انعقاد پر خصوصی شکریہ ادا کیا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 54 days ago
گومل یونیورسٹی کے سٹی کیمپس اور ٹانک کیمپس میں بی ایس (آنرز)' ایم فل اور پی ایچ ڈی داخلہ فارمز جمع کرانے کیلئے ایڈمیشن بوتھ کا قیام کر دیا گیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'02ستمبر 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی ہدایت پر گومل یونیورسٹی کے مختلف شعبہ جات میں بی ایس (آنرز) ، ایم فل اورپی ایچ ڈی ایڈمیشن فارمز جمع کرانے کیلئے ٹانک کیمپس اور سٹی کیمپس میں ایڈمیشن بوتھ کا قیام کر دیا گیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے گومل یونیورسٹی کے مختلف شعبہ جات میں بی ایس (آنرز) ، ایم فل اورپی ایچ ڈی میں داخلہ فارمز جمع کرانے کیلئے آنیوالے طلباء اور انکے والدین کی مشکلات کو مد نظر رکھتے ہوئے اوران کی سہولت کیلئے گومل یونیورسٹی کے سب کیمپس ٹانک اورسٹی کیمپس میں ایڈمیشن بوتھ کا قیام کر دیاتاکہ ٹانک سمیت جنوبی وزیرستان بلکہ ڈیرہ اسماعیل خان اور باہر سے آنیوالے طلباء اور ان کے والدین جو گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس تک آسانی سے نہیں پہنچ سکتے وہ اب اپنے ایڈمیشن فارم گومل یونیورسٹی کے سب کیمپس ٹانک اور سٹی کیمپس میں بھی جمع کروا سکتے ہیں۔گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس میں ڈائریکٹر ایڈمیشن آفس میں بھی فارمز جمع ہو رہے ہیں۔واضح رہے کہ گومل یونیورسٹی کے ملحقہ (ایفیلیٹڈ )کالجز میں زیر تعلیم پانچویں سمسٹر کے وہ طلباء جو گومل یونیورسٹی میں داخلہ لینا چاہتے ہیں ان کیلئے گومل یونیورسٹی کے قوانین و ضوابط کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے گومل یونیورسٹی میں 5ویں سمسٹر میں داخلے کا موقع بھی دیاگیا۔ گومل یونیورسٹی میں ایم فل اور پی ایچ ڈی میں داخلے جمع کرانے کی آخری تاریخ 15ستمبر2020بروز منگل جبکہ بی ایس آنرز میںداخلے کی آخری تاریخ 17 ستمبر2020 بروز جمعرات ہے اور تمام امیدوار داخلے کیلئے آن لائن درخواست فارم اور بینک چالان لیں گے ۔ایڈمیشن کے حوالے سے دیگر معلومات گومل یونیورسٹی کی ویب سائٹwww.gu.edu.pk یا ایڈمیشن آفس نمبر 0966-750404یا گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس میں ایڈمیشن آفس سے بھی لی جا سکتی ہیں۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 54 days ago
گومل یونیورسٹی میں بی ایس آنرز داخلے کی تاریخ17ستمبرجبکہ ایم فل اور پی ایچ ڈی میں داخلے کی تاریخ 15ستمبر تک بڑھا دی گئی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ26اگست 2020)گومل یونیورسٹی کے مختلف شعبہ جات میں بی ایس آنرز کیلئے ایڈمیشن کی تاریخ میں17ستمبر2020جبکہ ایم فل اور پی ایچ ڈی داخلوں کی تاریخ میں15ستمبر 2020 تک توسیع کر دی گئی۔تفصیلات کے مطابق وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی خصوصی ہدایت پر گومل یونیورسٹی کے ڈائریکٹر ایڈمیشن ڈاکٹر محمد صدیق نے گومل یونیورسٹی کے مختلف شعبہ جات میں بی ایس آنرز ، ایم فل اور پی ایچ ڈی کے داخلوں میں توسیع کر دی جس کے بعد اب ایم فل اور پی ایچ ڈی میں داخلے جمع کرانے کی آخری تاریخ 15ستمبر2020بروز منگل جبکہ بی ایس آنرز میں داخلے کی آخری تاریخ17 ستمبر 2020 بروز جمعرات تک بڑھا دی گئی ہے اور تمام امیدوار داخلے کیلئے آن لائن درخواستیں دیں گے۔ ایڈمیشن کے حوالے سے دیگر معلومات گومل یونیورسٹی کی ویب سائٹwww.gu.edu.pkیا ایڈمیشن آفس نمبر0966-750404یا گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس میں ایڈمیشن آفس سے بھی لی جا سکتی ہیں۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 64 days ago
وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے ایچ ای سی کی جانب سے احساس انڈرگریجویٹ سکالرشپ پروگرام کے طلباء میں چیک تقسیم کر دیئے
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ25اگست 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے ہائیر ایجوکیشن کمیشن اسلام آباد کے احساس انڈرگریجویٹ سکالرشپ پروگرام کے طلباء میں چیک تقسیم کر دیئے گئے۔ اس موقع پرتمام شعبہ جات کے ڈین 'رجسٹرار اورفوکل پرسن احساس انڈر گریجویٹ سکالر شپ پروگرام ڈاکٹر نعمان رحیم بھی موجود تھے۔ ڈاکٹر نعمان رحیم نے احساس پروگرام کی تفصیلات کے بارے میں تمام ممبران کو آگاہ کرتے ہوئے بتایا کہ وزیراعظم پاکستان عمران خان کے اعلان کے بعد ہائیر ایجوکیشن (ایچ ای سی)اسلام آباد کی جانب سے شروع کئے گئے احساس انڈرگریجویٹ سکالرشپ پروگرام کے تحت گومل یونیورسٹی میں 1686طلباء نے درخواستیں جمع کروائیں جن میں 1176طلباء اہل ٹھہرے تھے جس پر ہائیر ایجوکیشن کمیشن اسلام آباد نے گومل یونیورسٹی کے 1119 طلباء کیلئے سکالر شپ منظور کر لیاجن میں آج چیک تقسیم کئے جا رہے ہیں ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے تما م طلباء کو مبارک باد دیتے ہوئے کہا کہ حکومت کی طرف سے آج جو آپ کو پیسے ملے ان کو آپ تمام طلباء اپنے تعلیمی اخراجات پر خرچ کریں اوراپنے مستقبل کو روشن کریں ۔ انہوں نے مزید کہا کہ غریب اور مستحق طلباء کے لئے اس طرح کے سکالر شپ دینا حکومت کا خوش آئند اقدام ہے جس سے وہ طلباء بھی تعلیم حاصل کر سکیں گے جو شاید پیسے نہ ہونے کی وجہ سے اپنی تعلیم جاری نہیں رکھ سکتے۔ڈاکٹر افتخار نے مزید کہا کہ میں ہائیر ایجوکیشن کمیشن اسلام آباد کا بھی شکریہ ادا کرتا ہوں جنہوں نے ہماری درخواست پر طلباء کی تعداد کو بڑھا دیا جس سے ڈیرہ اسماعیل خان سمیت جنوبی وزیرستان اور دیگر علاقوں میں غریب طلباء کی بڑی تعداد زیور تعلیم سے مستفید ہوگی۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 65 days ago
کافر کوٹ قلعہ کی خستہ حالی کو دیکھ کر بہت افسوس ہوا کہ اتنی تاریخی آثار قدیمہ پر کسی نے توجہ نہیں دی اوراس جگہ پرسیمنٹ فیکٹری کا قیام نہایت ہی افسوسناک ہے'وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ24اگست 2020)آثار قدیمہ کسی بھی علاقے میں تاریخی اعتبار سے نہایت ہی اہمیت کے حامل ہوتے ہیں اور ان آثار قدیمہ کی حفاظت اور انکو محفوظ بنانا حکومت وقت کی ذمہ داری ہے۔ ان خیالات کا اظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے بلوٹ کے مقام پر موجودہ آثار قدیمہ کافر کوٹ قلعہ کے دورے کے موقع پر کیا۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ کافر کوٹ قلعہ کی خستہ حالی کو دیکھ کر بہت افسوس ہوا کہ اتنی تاریخی آثار قدیمہ پر کسی نے توجہ نہیں دی اوراس جگہ پرسیمنٹ فیکٹری کا قیام نہایت ہی افسوس ناک ہے اور اس کو فورا سیمنٹ فیکٹری سے فارغ کروایا جائے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ کافر کوٹ قلعہ کے مقام پر پرانی تاریخ دیکھنے کو ملتی ہے ۔دور دراز علاقوں سے لوگ اور طلباء اس آثار قدیمہ کو دیکھنے آتے ہیں ۔ڈاکٹر افتخار نے صوبائی حکومت، محکمہ آثار قدیمہ سمیت ڈیرہ اسماعیل خان کے ممبران قومی اور صوبائی اسمبلی سے درخواست کی ہے کہ ڈیرہ اسماعیل خان کے سب سے بڑی دلکش آثار قدیمہ کافر کوٹ قلعے کی حفاظت، اسکو محفوظ بنانے اور اس پر توجہ دینے کیلئے اپناخصوصی کردار ادا کریںاور اسکو سیمنٹ فیکٹری سے فورا فارغ کروائیںتاکہ اس تاریخی آثار قدیمہ کو بچایا جا سکے اور یہاں پر ایک بہترین سیاحتی مقام عوام کو مہیا کیا جا سکے ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 65 days ago
اگر گومل یونیورسٹی میں ڈسپلن کا قیام ہو سکتا ہے توپاکستان کے کسی بھی ادارے میںڈسپلن کا قیام ناممکن نہیں'پروفیسر ڈاکٹر جی اے میانہ
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ20اگست 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سے سابق وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر غلام عباس میانہ(جی اے میانہ) نے ملاقات کی ۔انہوں نے ڈینز،فیکلٹی ممبران سے بھی ملاقات کی۔ پروفیسر ڈاکٹر غلام عباس میانہ نے کہا کہ گومل یونیورسٹی وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد کی قیادت میں ترقی کی راہ پر گامزن ہو چکی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ تنخواہوں کا مسئلہ میرے دور میں بھی تھا مگر میں ڈاکٹر افتخار کو خرا ج تحسین پیش کرتا ہوں کہ انہوںنے نہایت ہی بہترین حکمت عملی سے ملازمین کی تنخواہوں کے مسئلے کو حل کیا۔ ڈاکٹر میانہ نے گومل یونیورسٹی میںامتحان ہال کے معائنہ کے دوران طلباء کے ڈسپلن کو دیکھتے ہوئے کہا کہ اگر گومل یونیورسٹی میں ڈسپلن کا قیام ہو سکتا ہے توپاکستان کے کسی بھی ادارے میںڈسپلن کا قیام ناممکن نہیں۔ ڈاکٹر میانہ نے کورونا وائرس سے بچائو کے ایس او پیز پر عملدرآمد کراتے ہوئے امتحان کروانے پر گومل یونیورسٹی کے وائس چانسلر اورانتظامیہ کو خراج تحسین پیش کیا ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے ڈاکٹر میانہ کا گومل یونیورسٹی آمد پر شکریہ اداکیا ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 79 days ago
گومل یونیورسٹی کی زمین لاوارث نہیں'یونیورسٹی کی زمین پر قبضہ کرنیوالوں کیخلاف آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائیگا' ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'10اگست 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمدکا پرفضاء وتفریحی مقام شیخ بدین کے مقام پر گومل یونیورسٹی کی 1800کنال اراضی کا دورہ۔ اس موقع پر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی، کوارڈینیٹر سٹی کیمپس ڈاکٹر شکیب اللہ،ڈائریکٹر انگریزی احسان اللہ دانش اور سیکیورٹی آفیسر شمروز خان بھی ہمراہ تھے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ شیخ بدین کے پر فضاء تفریحی مقام پر گومل یونیورسٹی کی زمین کا ہونا خوش آئند ہے۔ یہاں آکر ملکہ کوہسار کو بھول گیا ہوں کہ اس علاقے میں بھی اتنی پرفضاء ، تفریحی اور خوبصورت جگہ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کی زمین پر کسی کو بھی ایک انچ قبضہ نہیں کرنے دینگے ۔ گومل یونیورسٹی کی زمین لاوارث نہیں کہ کوئی بھی اس پر قبضہ کر لے یا جس کا دل ہو یونیورسٹی کے جنگلات سے لکڑیاںکاٹ کر گومل یونیورسٹی کونقصان پہنچائے۔ ایسے لوگوں کیخلاف قانونی کارروائی کی جائے گی اور ان سے آہنی ہاتھوں سے نمٹاجائے گا ۔انہوں نے سیکیورٹی آفیسر کو فوری طور پر ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ شیخ بدین پر گومل یونیورسٹی کے بورڈ توڑنے والوں کیخلاف فوری طور پر ایف آئی آر کروائی جائے تاکہ آئندہ کوئی بھی اس طرح کی غلط حرکت نہ کر سکے اور اس مقام پر گومل یونیورسٹی کاسیکیورٹی اہلکار تعینات کیا جائے جوگومل یونیورسٹی کی زمین کی رکھوالی کرے۔ انہوں نے مزید کہا کہ شیخ بدین کے مقام پر روڈ کی تعمیر کروائی جائے اور یہاں گومل یونیورسٹی کا ایک چھوٹا گیسٹ ہائوس بنیادی سہولیات کیساتھ بنایا جائے تاکہ بنوں اور ڈیرہ ڈویژن کے لو گ اس پر فضاء تفریحی مقام سے مستفید ہوں ۔وائس چانسلر نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کے گیسٹ ہائوس کے قیام سے اس علاقے کی خوبصورتی میں اضافہ ہو گا اور گومل یونیورسٹی کی آمدن کا ذریعہ بھی بنے گا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 81 days ago
گومل یونیورسٹی کے سب کیمپس ٹانک کے ڈائریکٹر نے وی آئی پی کلچر کا خاتمہ کرتے ہوئے شجرکاری مہم کاافتتاح کر دیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'08اگست 2020)گومل یونیورسٹی کے سب کیمپ ٹانک میں شجرکاری مہم کاافتتاح کر دیا' ڈائریکٹر ٹانک کیمپس پروفیسر ڈاکٹر محمد جمیل نے وی آئی پی کلچر کا خاتمہ کرتے ہوئے سینئر نائب قاصد نواب خان سے پودا لگوا کر شجرکاری مہم کا افتتاح کیا۔ اس موقع پر ٹانک کیمپس کے اساتذہ و ملازمین بھی شریک تھے۔ تفصیلات کے مطابق وائس چانسلر گومل یونیورسٹی کی ہدایت پر سب کیمپس ٹانک میں شجرکاری مہم کاافتتاح کیا۔ شجرکاری مہم میںڈپٹی کمشنر کبیر آفریدی، ڈسٹرکٹ فارسٹ آفیسر نے بھی خصوصی تعاون کیا۔ اس موقع پر ڈائریکٹر ٹانک کیمپس ڈاکٹر جمیل نے کہا کہ پہلے مرحلے میں ہم نے 500کے قریب پودے لگا کر شجرکار ی مہم کاافتتاح کردیا ہے جومزید آگے بڑھے گا جس سے گومل یونیورسٹی کا ٹانک کیمپس خوبصورت ہو گا۔ ڈاکٹر جمیل نے مزید کہا کہ ہم وی آئی پی کلچر کو نہیں مانتے اور خوشی ہوئی کے وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار نے وی آئی پی کلچر کاخاتمہ کیا اس لئے آج ہم نے کیمپس کے سینئر نائب قاصد سے شجرکاری مہم کاافتتاح کیاہے۔ڈاکٹر جمیل نے شجرکاری مہم میںڈپٹی کمشنر کبیر آفریدی، ڈسٹرکٹ فارسٹ آفیسر نے بھی خصوصی تعاون پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ شجر کاری مہم میں ڈائریکٹر ٹانک کیمپس پروفیسر ڈاکٹر محمد جمیل کے ساتھ تمام اساتذہ اور ملازمین نے بھی پودے لگا ئے اور اختتام پر پاکستان میں امن کا قیام ، سلامتی اور گومل یونیورسٹی کی ترقی و خوشحالی کیلئے دعا بھی کی گئی ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 83 days ago
گومل یونیورسٹی نے امتحانات میں بھی سبقت حاصل کر لی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'06اگست 2020)گومل یونیورسٹی میں کورونا وائرس کے ایس او پیز کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے امتحانات میں بھی سبقت حاصل کرلی ۔تفصیلات کے مطابق گومل یونیورسٹی نے سب سے پہلے آن لائن کلاسز کا اجراء کروانے کے بعد امتحانات میںبھی سبقت حاصل کر لی ۔امتحان سے ایک دن پہلے امتحانی ہال کو کلورین سپرے کیا گیا۔ امتحانات میں طلباء ماسک اور سینیٹائزر ساتھ لے کر آئے اوراس موقع پر تمام طلباء کا ٹمپریچر چیک کیا گیا اور امتحانی ہال میں سماجی فاصلے سے بٹھایا گیا۔ امتحانی عملے نے بھی سختی ہدایات پر ماسک اور حفاظتی دستانے پہننے ہو ئے تھے۔ کورونا وائرس سے بچائو کیلئے حفاظتی تدابیر پر ڈین فیکلٹی آف فارمیسی پروفیسر ڈاکٹر حلیم شاہ، ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی' پرووسٹ ڈاکٹر زاہد رسول سمیت پرووسٹ سیکشن کے عملے نے سختی سے عملدرآمد کروا کر کامیاب امتحان کا انعقاد کروایا۔پرووسٹ ڈاکٹر زاہد رسول کی سربراہی میں امتحانات کیلئے آنیوالے طلباء کو علیحدہ کمروں میں رکھا گیا اور تمام طالبعلم کو کھانے کیلئے ایک بند پارسل مہیا کیا گیا۔ ہاسٹل کے کامن رومز اور ٹی وی ہال کو بند کر دیا گیا ہے اور پرووسٹ 24گھنٹے تمام ہاسٹلزکوبھی خود مانیٹرکررہے ہیں ۔ واضح رہے کہ گومل یونیورسٹی میں ایک ایک فیکلٹی کے بغیر کسی تعطل کے مرحلہ وار امتحانات کروائیں جائیں گے ۔ پہلے مرحلے میں چوتھے سال والے طلبائ،دوسرے مرحلے میں تیسرے سال ، تیسرے مرحلے میں دوسرے سال اور چوتھے مرحلے میں پہلے سال والے طلباء کے امتحان گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس، سٹی کیمپس اور وینسم کالج کے تمام ہالز میں کروائیں جائیں گے جوہفتہ ، اتوار کو بھی جاری رہیںگے ۔