User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 3 days ago
گومل یونیورسٹی کی زمین لاوارث نہیں'یونیورسٹی کی زمین پر قبضہ کرنیوالوں کیخلاف آہنی ہاتھوں سے نمٹا جائیگا' ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'10اگست 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمدکا پرفضاء وتفریحی مقام شیخ بدین کے مقام پر گومل یونیورسٹی کی 1800کنال اراضی کا دورہ۔ اس موقع پر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی، کوارڈینیٹر سٹی کیمپس ڈاکٹر شکیب اللہ،ڈائریکٹر انگریزی احسان اللہ دانش اور سیکیورٹی آفیسر شمروز خان بھی ہمراہ تھے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ شیخ بدین کے پر فضاء تفریحی مقام پر گومل یونیورسٹی کی زمین کا ہونا خوش آئند ہے۔ یہاں آکر ملکہ کوہسار کو بھول گیا ہوں کہ اس علاقے میں بھی اتنی پرفضاء ، تفریحی اور خوبصورت جگہ ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کی زمین پر کسی کو بھی ایک انچ قبضہ نہیں کرنے دینگے ۔ گومل یونیورسٹی کی زمین لاوارث نہیں کہ کوئی بھی اس پر قبضہ کر لے یا جس کا دل ہو یونیورسٹی کے جنگلات سے لکڑیاںکاٹ کر گومل یونیورسٹی کونقصان پہنچائے۔ ایسے لوگوں کیخلاف قانونی کارروائی کی جائے گی اور ان سے آہنی ہاتھوں سے نمٹاجائے گا ۔انہوں نے سیکیورٹی آفیسر کو فوری طور پر ہدایات دیتے ہوئے کہا کہ شیخ بدین پر گومل یونیورسٹی کے بورڈ توڑنے والوں کیخلاف فوری طور پر ایف آئی آر کروائی جائے تاکہ آئندہ کوئی بھی اس طرح کی غلط حرکت نہ کر سکے اور اس مقام پر گومل یونیورسٹی کاسیکیورٹی اہلکار تعینات کیا جائے جوگومل یونیورسٹی کی زمین کی رکھوالی کرے۔ انہوں نے مزید کہا کہ شیخ بدین کے مقام پر روڈ کی تعمیر کروائی جائے اور یہاں گومل یونیورسٹی کا ایک چھوٹا گیسٹ ہائوس بنیادی سہولیات کیساتھ بنایا جائے تاکہ بنوں اور ڈیرہ ڈویژن کے لو گ اس پر فضاء تفریحی مقام سے مستفید ہوں ۔وائس چانسلر نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کے گیسٹ ہائوس کے قیام سے اس علاقے کی خوبصورتی میں اضافہ ہو گا اور گومل یونیورسٹی کی آمدن کا ذریعہ بھی بنے گا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 5 days ago
گومل یونیورسٹی کے سب کیمپس ٹانک کے ڈائریکٹر نے وی آئی پی کلچر کا خاتمہ کرتے ہوئے شجرکاری مہم کاافتتاح کر دیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'08اگست 2020)گومل یونیورسٹی کے سب کیمپ ٹانک میں شجرکاری مہم کاافتتاح کر دیا' ڈائریکٹر ٹانک کیمپس پروفیسر ڈاکٹر محمد جمیل نے وی آئی پی کلچر کا خاتمہ کرتے ہوئے سینئر نائب قاصد نواب خان سے پودا لگوا کر شجرکاری مہم کا افتتاح کیا۔ اس موقع پر ٹانک کیمپس کے اساتذہ و ملازمین بھی شریک تھے۔ تفصیلات کے مطابق وائس چانسلر گومل یونیورسٹی کی ہدایت پر سب کیمپس ٹانک میں شجرکاری مہم کاافتتاح کیا۔ شجرکاری مہم میںڈپٹی کمشنر کبیر آفریدی، ڈسٹرکٹ فارسٹ آفیسر نے بھی خصوصی تعاون کیا۔ اس موقع پر ڈائریکٹر ٹانک کیمپس ڈاکٹر جمیل نے کہا کہ پہلے مرحلے میں ہم نے 500کے قریب پودے لگا کر شجرکار ی مہم کاافتتاح کردیا ہے جومزید آگے بڑھے گا جس سے گومل یونیورسٹی کا ٹانک کیمپس خوبصورت ہو گا۔ ڈاکٹر جمیل نے مزید کہا کہ ہم وی آئی پی کلچر کو نہیں مانتے اور خوشی ہوئی کے وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار نے وی آئی پی کلچر کاخاتمہ کیا اس لئے آج ہم نے کیمپس کے سینئر نائب قاصد سے شجرکاری مہم کاافتتاح کیاہے۔ڈاکٹر جمیل نے شجرکاری مہم میںڈپٹی کمشنر کبیر آفریدی، ڈسٹرکٹ فارسٹ آفیسر نے بھی خصوصی تعاون پر ان کا شکریہ ادا کیا۔ شجر کاری مہم میں ڈائریکٹر ٹانک کیمپس پروفیسر ڈاکٹر محمد جمیل کے ساتھ تمام اساتذہ اور ملازمین نے بھی پودے لگا ئے اور اختتام پر پاکستان میں امن کا قیام ، سلامتی اور گومل یونیورسٹی کی ترقی و خوشحالی کیلئے دعا بھی کی گئی ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 7 days ago
گومل یونیورسٹی نے امتحانات میں بھی سبقت حاصل کر لی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'06اگست 2020)گومل یونیورسٹی میں کورونا وائرس کے ایس او پیز کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے امتحانات میں بھی سبقت حاصل کرلی ۔تفصیلات کے مطابق گومل یونیورسٹی نے سب سے پہلے آن لائن کلاسز کا اجراء کروانے کے بعد امتحانات میںبھی سبقت حاصل کر لی ۔امتحان سے ایک دن پہلے امتحانی ہال کو کلورین سپرے کیا گیا۔ امتحانات میں طلباء ماسک اور سینیٹائزر ساتھ لے کر آئے اوراس موقع پر تمام طلباء کا ٹمپریچر چیک کیا گیا اور امتحانی ہال میں سماجی فاصلے سے بٹھایا گیا۔ امتحانی عملے نے بھی سختی ہدایات پر ماسک اور حفاظتی دستانے پہننے ہو ئے تھے۔ کورونا وائرس سے بچائو کیلئے حفاظتی تدابیر پر ڈین فیکلٹی آف فارمیسی پروفیسر ڈاکٹر حلیم شاہ، ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی' پرووسٹ ڈاکٹر زاہد رسول سمیت پرووسٹ سیکشن کے عملے نے سختی سے عملدرآمد کروا کر کامیاب امتحان کا انعقاد کروایا۔پرووسٹ ڈاکٹر زاہد رسول کی سربراہی میں امتحانات کیلئے آنیوالے طلباء کو علیحدہ کمروں میں رکھا گیا اور تمام طالبعلم کو کھانے کیلئے ایک بند پارسل مہیا کیا گیا۔ ہاسٹل کے کامن رومز اور ٹی وی ہال کو بند کر دیا گیا ہے اور پرووسٹ 24گھنٹے تمام ہاسٹلزکوبھی خود مانیٹرکررہے ہیں ۔ واضح رہے کہ گومل یونیورسٹی میں ایک ایک فیکلٹی کے بغیر کسی تعطل کے مرحلہ وار امتحانات کروائیں جائیں گے ۔ پہلے مرحلے میں چوتھے سال والے طلبائ،دوسرے مرحلے میں تیسرے سال ، تیسرے مرحلے میں دوسرے سال اور چوتھے مرحلے میں پہلے سال والے طلباء کے امتحان گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس، سٹی کیمپس اور وینسم کالج کے تمام ہالز میں کروائیں جائیں گے جوہفتہ ، اتوار کو بھی جاری رہیںگے ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 13 days ago
EID MUBARAK
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 15 days ago
گومل یونیورسٹی کے وائس چانسلر کی ایگزیکٹو ڈائریکٹر ایچ ای سی سے ملاقات'بی اے اور ایم اے کی ڈگری ختم کرنے کے فیصلہ پر دوبارہ نظرثانی کی گزارش
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'29جولائی 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ہائیر ایجوکیشن کمیشن (ایچ ای سی)اسلام آباد ڈاکٹر فتح محمد مری سے ملاقات کی اور بی اے اور ایم اے کی ڈگری ختم ہونے سے خیبرپختونخوا طلباء کو پیش ہونیوالے مسائل کے بارے میں تفصیل سے آگاہ کیا۔ وائس چانسلر گومل یونیورسٹی نے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ایچ ای سی کو بتایا کہ ڈیرہ اسماعیل خان، جنوبی وزیرستان،ٹانک،وانا جیسے پسماندہ علاقوںسمیت خیبرپختونخوا کے دیگر اضلاع کے تقریبا 2لاکھ کے قریب پرائیویٹ طلباء بی اے اور ایم اے کی ڈگری ختم ہونے سے مشکلات اورہیجانی کیفیت کا شکار ہو گئے ہیں ۔ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ ایچ ای سی طلبہ کو پرائیویٹ بی اے اور ایم اے کا نعم البدل مہیا کریں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایچ ای سی کا ایسوسی ایٹ ڈگری کا نوٹیفیکیشن خود متضادات کا شکار ہے اور اس پر عمل کرنا کسی بھی کالج کے لئے ممکن نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ اس کو ٹھیک کیا جائے اور کالجوں کی صلاحیتوں کو بڑھایا جائے اورکالجوں کیلئے آسان ترین 2+2ماڈل کو لاگو کیا جائے۔ اس موقع پر ایگزیکٹو ڈائریکٹر ڈاکٹر فتح محمد مری نے وائس چانسلر گومل یونیورسٹی کو یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ میں چیئر مین ہائیر ایجوکیشن کمیشن اسلام آباد سے اس معاملے میں بات کروں گا ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 16 days ago
گومل یونیورسٹی کی104ویں سنڈیکیٹ میٹنگ میں ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن دلنواز خان کو گومل یونیورسٹی کی نوکری سے ڈسمس کر دیا گیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'28 جولائی 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی زیر صدارت گومل یونیورسٹی کی 104ویں سنڈیکیٹ میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔ اس موقع پر سنڈیکیٹ ممبرا ن نے شرکت کی۔ گزشتہ 103ویں سنڈیکیٹ میٹنگ میں ہونیوالے فیصلہ کے مطابق ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن دلنواز خان کو104ویں سنڈیکیٹ میٹنگ میں شوکاز نوٹس کا جواب دینے اور ذاتی شنوائی کا موقع ملا۔ جس کے تحت دلنواز خان نے نہ تو شوکاز نوٹس کا جواب دیا اور نہ ہی میٹنگ میں پیش ہوئے ۔ جس پر گومل یونیورسٹی سنڈیکیٹ نے ان کو سخت سزا دیتے ہوئے گومل یونیورسٹی کی نوکری سے ڈسمس کر دیا ۔ تفصیلات کے مطابق گومل یونیورسٹی کے ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن دلنواز خان نے101ویں سنڈیکیٹ میٹنگ میں ہائیر ایجوکیشن اسلام آبادکے منتخب نمائندہ اوربہائو الدین زکریا یونیورسٹی کے معزز وائس چانسلر کے خلاف جھوٹی اور من گھڑت درخواستیں گورنر پنجاب اور چیئر مین ہائیر ایجوکیشن کمیشن اسلام آباد کو دیں اور اعلیٰ حکام کو گمراہ کیا۔ جس پر 102ویں سنڈیکیٹ میٹنگ کی جانب سے سخت مذمت اور دلنواز خان کے خلاف فوری انکوائری کرنے اور خیبرپختونخوا یونیورسٹی ایکٹ 2012ترمیم شدہ2016 میں کارکردگی اور نظم و ضبط قوانین کے تحت سخت سزاتجویز کرتے ہوئے نوکری سے ڈسمس کرتے ہوئے شوکاز نوٹس دینے اور سات دن کے اندر جواب جمع کرانے سمیت 104ویں سنڈیکیٹ میٹنگ میں ذاتی شنوائی کا موقع دیا۔ مگر دلنواز خان نے نہ تو شوکاز نوٹس کا جواب دیا اور نہ ہی میٹنگ میں پیش ہوئے تاہم گومل یونیورسٹی کی سندیکیٹ نے 104ویں سنڈیکیٹ میٹنگ میں ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن دلنواز خان کو گومل یونیورسٹی کی نوکری سے ڈسمس کردیا۔ میٹنگ میں جسٹس(ر) محمد دائود،رجسٹرار طارق محمود، ڈائریکٹر فنانس اقبال اعوان، ڈین فیکلٹی آف سائنسز و فارمیسی پروفیسر ڈاکٹر حلیم شاہ ،ڈین زرعی فیکلٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی، ڈین فیکلٹی آف آرٹس پروفیسرڈاکٹر نعمت اللہ بابر،ایسوسی ایٹ پروفیسر فیکلٹی آف ایگریکلچر ڈاکٹر محمد اقبال، اسسٹنٹ پروفیسر شعبہ انسٹیٹیوٹ آف کیمیکل سائنسز ڈاکٹر محمد عدیل ،نمائندہ فنانس ڈیپارٹمنٹ حیات الرحمن، پرنسپل ڈگری کالج درابن محمد شکیل ملک،پرنسپل گورنمنٹ گرلز ڈگری کالج نمبر1مسز شفقت
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 24 days ago
وائس چانسلر گومل یونیورسٹی کی زیر صدارت 103ویں سنڈیکیٹ میٹنگ کا انعقاد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'20 جولائی 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی زیر صدارت 103ویں سنڈیکیٹ میٹنگ کا انعقاد کیا گیا ۔ وائس چانسلرگومل یونیورسٹی نے سنڈیکیٹ کے نئے منتخب ہونیوالے ممبران پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی، پروفیسرڈاکٹر نعمت اللہ بابر،ڈاکٹر محمد عدیل کوانکی پہلی سنڈیکیٹ میٹنگ میں خوش آمدید کہا۔اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ گومل یونیورسٹی اس خطے کی ہی نہیں بلکہ پورے ملک کی قدیم تعلیمی درسگاہوں میں سے ایک ہے اور میں اس کو ترقی کرتا دیکھنا چاہتا ہوں۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی میں ڈسپلن کا قیام میری اولین ترجیح ہے اور اس پر سختی سے عملدرآمد شروع ہو چکا ہے ۔گومل یونیورسٹی میں قانون سے بالاتر کوئی نہیں اور کسی کو بھی یونیورسٹی کی ساکھ خراب کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔
 
 
User Image Muhammad Faheem Chughtai Posted Video - 26 days ago

FET GOMAL UNIVERSITY

Visit to the Faculty of Engineering and Technology, GOMAL UNIVERSITY.
 
 
User Image Muhammad Faheem Chughtai Posted Video - 26 days ago

FUTURE OF NEWLY MERGED DISTRICTS

Personal views based on experiences about Newly Merged Districts. People are the key agents of permanent peace and success, therefore it is the duty of everyone of us to support the transition process in the NMDs for quicker results.
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 28 days ago
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 28 days ago
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 28 days ago
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 28 days ago

 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 28 days ago
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 28 days ago
وائس چانسلر گومل یونیورسٹی کا فنڈز کی کمی کے باوجود پنشنرز ملازمین کو بقایا جات کی مد میں فی کس ایک ایک لاکھ روپے دینے کا اعلان
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'07 جولائی 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے ڈائریکٹرفنانس گومل یونیورسٹی اقبال اعوان کو بقایا جات کی مد میں تمام 170پنشنرز ملازمین کو فی کس ایک لاکھ روپے دینے کا حکم صادر فرما دیا۔ تفصیلات کے مطابق وائس چانسلر نے ڈائریکٹر فنانس کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ مجھے بخوبی علم ہے کہ گومل یونیورسٹی کافی عرصہ سے فنڈز کی کمی کا شکار 'مالی مشکلات اور خسارہ میں ہے لیکن اس مشکل وقت میں بھی گومل یونیورسٹی اپنے پنشنرز جنہوں نے ادارے کی ترقی و خوشحالی میں دن رات کام کیا ہے کو تنہا اور بے یار و مددگار نہیں چھوڑے گی۔لہٰذا تمام 170پنشنرز کو فی کس ایک ایک لاکھ روپے کی فوری طور پر ادائیگی کر دیں تاکہ ان پنشنرز کو کسی حد تک اپنے مسائل کا ازالہ ہونے کی امید ہو ۔وائس چانسلر نے مزید کہا کہ میں نے اعلی حکام کو تحریری طور پر پنشنرز کو پنشن ادائیگی کے لئے لکھا بھی ہے اور میری پوری کوشش ہے کہ جلد ہی بقایا جات کی مدمیں ان تمام ملازمین کی مکمل پنشن ادا کر دی جائے ۔واضح رہے کہ گومل یونیورسٹی نے 170پنشنرز ملازمین کو فنڈز کی کمی کے باوجود فی کس ایک ایک لاکھ روپے ادا ئیگی کے مراحل پر کام شروع کر دیا ہے جو انشاء اللہ اگلے چند روز میں کر دی جائے گی۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 28 days ago
وائس چانسلر گومل یونیورسٹی کا فنڈز کی کمی کے باوجود پنشنرز ملازمین کو بقایا جات کی مد میں فی کس ایک ایک لاکھ روپے دینے کا اعلان
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'07 جولائی 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے ڈائریکٹرفنانس گومل یونیورسٹی اقبال اعوان کو بقایا جات کی مد میں تمام 170پنشنرز ملازمین کو فی کس ایک لاکھ روپے دینے کا حکم صادر فرما دیا۔ تفصیلات کے مطابق وائس چانسلر نے ڈائریکٹر فنانس کو ہدایات جاری کرتے ہوئے کہا کہ مجھے بخوبی علم ہے کہ گومل یونیورسٹی کافی عرصہ سے فنڈز کی کمی کا شکار 'مالی مشکلات اور خسارہ میں ہے لیکن اس مشکل وقت میں بھی گومل یونیورسٹی اپنے پنشنرز جنہوں نے ادارے کی ترقی و خوشحالی میں دن رات کام کیا ہے کو تنہا اور بے یار و مددگار نہیں چھوڑے گی۔لہٰذا تمام 170پنشنرز کو فی کس ایک ایک لاکھ روپے کی فوری طور پر ادائیگی کر دیں تاکہ ان پنشنرز کو کسی حد تک اپنے مسائل کا ازالہ ہونے کی امید ہو ۔وائس چانسلر نے مزید کہا کہ میں نے اعلی حکام کو تحریری طور پر پنشنرز کو پنشن ادائیگی کے لئے لکھا بھی ہے اور میری پوری کوشش ہے کہ جلد ہی بقایا جات کی مدمیں ان تمام ملازمین کی مکمل پنشن ادا کر دی جائے ۔واضح رہے کہ گومل یونیورسٹی نے 170پنشنرز ملازمین کو فنڈز کی کمی کے باوجود فی کس ایک ایک لاکھ روپے ادا ئیگی کے مراحل پر کام شروع کر دیا ہے جو انشاء اللہ اگلے چند روز میں کر دی جائے گی۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 28 days ago
تمام ملازمین ایک دوسرے کے حقوق اور عزت و نفس کاخیال رکھیں'وائس چانسلر گومل یونیورسٹی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'02 جولائی 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی گومل یونیورسٹی کے مالی اور سوئیپرز سے ملاقات کی۔ کورونا وائرس کے باعث ایس او پیز پر سخت سے عملدرآمد کرتے ہوئے ملاقات گومل یونیورسٹی فسیلیٹیشن سنٹر میں کی گئی۔ وائس چانسلر نے ملازمین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سب انسان برابر ہیں اور ایک دوسرے کے حقوق اور عزت و نفس کاخیال سب پرلازم و ملزوم ہے ۔ وائس چانسلر سے لے کر سوئیپر تک سب گومل یونیورسٹی کے ملازم ہیں ۔ گومل یونیورسٹی ہمارا گھر ہے اور ہم سب یہاں ایک فیملی کی طرح ہیں۔آپ ملازمین محنت ، ایمانداری اور لگن سے اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں جس پر آپ سب شاباشی کے مستحق ہیں۔ وائس چانسلر نے کہا کہ اگر کوئی افسر بے ایمان ہو ، چور ہو تو میرے حساب میں ہمیں اس کے عمل کی وجہ سے اس کو سزا لازمی دینی چاہئے۔ کسی کو بھی ادارے کو نقصان نہیں پہنچانے دونگا۔ وائس چانسلر نے مزید کہاکہ مجھے کہا گیا تھا کہ گومل یونیورسٹی میں کوئی کام نہیں کرتا ۔ مگر جب سے میں نے چارج سنبھالا اس وقت سے لے کر اب تک یہی دیکھا کہ یہاں پر کام کرنے والوں کی کوئی کمی نہیں۔ گومل یونیورسٹی کے مالی، سوئیپرز ، نائب قاصد، ڈرائیور سمیت تمام ملازمین نہایت ہی ایمانداری سے اپنا کام کررہے ہیں اور اس لئے آپ لوگوں سے ملاقات کی تاکہ آپ لوگوں سے مل کر آپ سب کو شاباش دے سکوں اور انشاء اللہ میں کوشش ہو گی کہ آپ کو ایک سکیل سے تین سکیل میں پروموٹ کر دوں ۔ میری نظر میں سب سے کمزور شخص ، معذور اور آپ جیسے کلاس فور ملازمین VIPہیںاور آپ تمام ملازمین کیلئے میرے دروازے ہمیشہ کھلے ہیں ۔گومل یونیورسٹی کو نکھارنے اور خوبصورت بنانے میں آپ ملازمین کا کردار قابل تحسین ہے۔ انشاء اللہ کورونا وائرس کے ختم ہوتے ہی آپ سب کے اعزاز میں جلد ایک پرتکلف کھانے کا اہتمام کروں گا جہاں میں آپ سب کے ساتھ بیٹھ کر کھانا کھائوں گا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 28 days ago
تمام ملازمین ایک دوسرے کے حقوق اور عزت و نفس کاخیال رکھیں'وائس چانسلر گومل یونیورسٹی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'02 جولائی 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی گومل یونیورسٹی کے مالی اور سوئیپرز سے ملاقات کی۔ کورونا وائرس کے باعث ایس او پیز پر سخت سے عملدرآمد کرتے ہوئے ملاقات گومل یونیورسٹی فسیلیٹیشن سنٹر میں کی گئی۔ وائس چانسلر نے ملازمین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سب انسان برابر ہیں اور ایک دوسرے کے حقوق اور عزت و نفس کاخیال سب پرلازم و ملزوم ہے ۔ وائس چانسلر سے لے کر سوئیپر تک سب گومل یونیورسٹی کے ملازم ہیں ۔ گومل یونیورسٹی ہمارا گھر ہے اور ہم سب یہاں ایک فیملی کی طرح ہیں۔آپ ملازمین محنت ، ایمانداری اور لگن سے اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں جس پر آپ سب شاباشی کے مستحق ہیں۔ وائس چانسلر نے کہا کہ اگر کوئی افسر بے ایمان ہو ، چور ہو تو میرے حساب میں ہمیں اس کے عمل کی وجہ سے اس کو سزا لازمی دینی چاہئے۔ کسی کو بھی ادارے کو نقصان نہیں پہنچانے دونگا۔ وائس چانسلر نے مزید کہاکہ مجھے کہا گیا تھا کہ گومل یونیورسٹی میں کوئی کام نہیں کرتا ۔ مگر جب سے میں نے چارج سنبھالا اس وقت سے لے کر اب تک یہی دیکھا کہ یہاں پر کام کرنے والوں کی کوئی کمی نہیں۔ گومل یونیورسٹی کے مالی، سوئیپرز ، نائب قاصد، ڈرائیور سمیت تمام ملازمین نہایت ہی ایمانداری سے اپنا کام کررہے ہیں اور اس لئے آپ لوگوں سے ملاقات کی تاکہ آپ لوگوں سے مل کر آپ سب کو شاباش دے سکوں اور انشاء اللہ میں کوشش ہو گی کہ آپ کو ایک سکیل سے تین سکیل میں پروموٹ کر دوں ۔ میری نظر میں سب سے کمزور شخص ، معذور اور آپ جیسے کلاس فور ملازمین VIPہیںاور آپ تمام ملازمین کیلئے میرے دروازے ہمیشہ کھلے ہیں ۔گومل یونیورسٹی کو نکھارنے اور خوبصورت بنانے میں آپ ملازمین کا کردار قابل تحسین ہے۔ انشاء اللہ کورونا وائرس کے ختم ہوتے ہی آپ سب کے اعزاز میں جلد ایک پرتکلف کھانے کا اہتمام کروں گا جہاں میں آپ سب کے ساتھ بیٹھ کر کھانا کھائوں گا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 28 days ago
تمام ملازمین ایک دوسرے کے حقوق اور عزت و نفس کاخیال رکھیں'وائس چانسلر گومل یونیورسٹی
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'02 جولائی 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی گومل یونیورسٹی کے مالی اور سوئیپرز سے ملاقات کی۔ کورونا وائرس کے باعث ایس او پیز پر سخت سے عملدرآمد کرتے ہوئے ملاقات گومل یونیورسٹی فسیلیٹیشن سنٹر میں کی گئی۔ وائس چانسلر نے ملازمین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ سب انسان برابر ہیں اور ایک دوسرے کے حقوق اور عزت و نفس کاخیال سب پرلازم و ملزوم ہے ۔ وائس چانسلر سے لے کر سوئیپر تک سب گومل یونیورسٹی کے ملازم ہیں ۔ گومل یونیورسٹی ہمارا گھر ہے اور ہم سب یہاں ایک فیملی کی طرح ہیں۔آپ ملازمین محنت ، ایمانداری اور لگن سے اپنے فرائض انجام دے رہے ہیں جس پر آپ سب شاباشی کے مستحق ہیں۔ وائس چانسلر نے کہا کہ اگر کوئی افسر بے ایمان ہو ، چور ہو تو میرے حساب میں ہمیں اس کے عمل کی وجہ سے اس کو سزا لازمی دینی چاہئے۔ کسی کو بھی ادارے کو نقصان نہیں پہنچانے دونگا۔ وائس چانسلر نے مزید کہاکہ مجھے کہا گیا تھا کہ گومل یونیورسٹی میں کوئی کام نہیں کرتا ۔ مگر جب سے میں نے چارج سنبھالا اس وقت سے لے کر اب تک یہی دیکھا کہ یہاں پر کام کرنے والوں کی کوئی کمی نہیں۔ گومل یونیورسٹی کے مالی، سوئیپرز ، نائب قاصد، ڈرائیور سمیت تمام ملازمین نہایت ہی ایمانداری سے اپنا کام کررہے ہیں اور اس لئے آپ لوگوں سے ملاقات کی تاکہ آپ لوگوں سے مل کر آپ سب کو شاباش دے سکوں اور انشاء اللہ میں کوشش ہو گی کہ آپ کو ایک سکیل سے تین سکیل میں پروموٹ کر دوں ۔ میری نظر میں سب سے کمزور شخص ، معذور اور آپ جیسے کلاس فور ملازمین VIPہیںاور آپ تمام ملازمین کیلئے میرے دروازے ہمیشہ کھلے ہیں ۔گومل یونیورسٹی کو نکھارنے اور خوبصورت بنانے میں آپ ملازمین کا کردار قابل تحسین ہے۔ انشاء اللہ کورونا وائرس کے ختم ہوتے ہی آپ سب کے اعزاز میں جلد ایک پرتکلف کھانے کا اہتمام کروں گا جہاں میں آپ سب کے ساتھ بیٹھ کر کھانا کھائوں گا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 45 days ago
گومل یونیورسٹی کا ایف اینڈ پی میٹنگ میں پہلی مرتبہ موجودہ سرپلس بجٹ منظور کرلیا گیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'29جون2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی زیر صدارت آن لائن56ویں ایف اینڈ پی (فنانس ایند پلاننگ) کمیٹی کا انعقاد کیا گیا جس میںپہلی مرتبہ موجودہ سرپلس بجٹ پیش منظور کر لیا جبکہ پچھلا خسارہ بھی کم ہو گیا ۔ اس موقع پرگومل یونیورسٹی ایف اینڈ پی /سنڈیکیٹ اور سینٹ کے ممبرجسٹس(ر) محمد دائود خان' فنانس ڈیپارٹمنٹ خیبرپختونخوا پشاور کے بجٹ آفیسر، محمد جاوید خان، ڈین فیکلٹی آف سائنسزاینڈ فارمیسی پروفیسر ڈاکٹرحلیم شاہ، رجسٹرار طارق محمود' ڈائریکٹر فنانس اقبال اعوان موجود تھے جبکہ ہائیر ایجوکیشن کمیشن اسلام آباد کے ڈپٹی ڈائریکٹر فنانس سید ثمرسبطین ، ہائیر ایجوکیشن ڈیپارٹمنٹ پشاور کے ڈپٹی سیکرٹری محمد ندیم اختر،سمیت ماہرین یونیورسٹی آف ہری پور کے مشیر برائے فنانس حاجی اکبر خان اورایبٹ آباد یونیورسٹی کے ڈائریکٹر فنانس غلام علی آن لائن موجود تھے ۔ وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ ہم نے آمدنی کو بڑھانا ہے اور خرچوںکو کم کرنا ہے اور اس کیلئے تعلیمی معیارپر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوگا۔ گومل یونیورسٹی کی تاریخ میں پہلی مرتبہ ریسرچ کیلئے 1فی صد بجٹ مختص کیا گیا ہے ۔ گومل یونیورسٹی کو خسارے سے نکالنے کیلئے خود انحصاری پر سختی سے عملدرآمد کی حکمت عملی بنائی گئی ہے ۔یہ گومل یونیورسٹی کا پہلا بجٹ ہو گا جس میںموجودہ نیا کوئی خسارہ شامل نہیں جبکہ پچھلا خسارہ جو 837ملین تھا اب کم ہو کر386ملین رہ گیا ہے جوانشاء اللہ جلد ہی ختم ہو جائے گا اور اگلابجٹ انشاء اللہ سارا سرپلس میں ہوگا۔انہوںنے مزید کہا کہ آپ کسی سے امید لگائیں کہ کوئی آئے گا اور سب ٹھیک کر دے گا تو ایساکچھ نہیں ہوتا ۔ آپ کو خود اللہ کی ذات پر توکل کرکے سنجیدگی اورنیک نیتی سے اپنا فرض ادا کرناہوگا ۔ وائس چانسلر نے کہا کہ گومل یونیورسٹی پرانی جامعہ ہے اور بہت سی چیزیں ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے ۔ فنانس کا مسئلہ ہے ۔ کچھ چیزیں اپنے سورس سے پوری کررہے ہیں جبکہ کچھ چیزوں کو ٹھیک کرنے کی ضرورت ہے جو انشاء اللہ جلد ٹھیک ہو جائیں گی ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ پینشنرز کی پنشن ادائیگی کا مسئلہ' ملازمین کی تنخواہ کی ادائیگی کیلئے فیسیں نہیں بڑھا سکتے ۔ گومل یونیورسٹی میں بلاضرورت فکس
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 47 days ago
نو سٹوڈنٹس بیہائنڈ ماڈل پسماندہ وترقی یافتہ سب جگہوں کیلئے سہولیات کے مطابق ایڈجسمنٹ کی اجازت دیتا ہے'پروفیسر مقبول کا گومل یونیورسٹی میں آن لائن سیمینار سے خطاب
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'27جون 2020)نو سٹوڈنٹس بیہائنڈ ماڈل ایسا یونیورسل ماڈل ہے جو پسماندہ اور ترقی یافتہ سب جگہوں کیلئے سہولیات کے مطابق ایڈجسمنٹ کی اجازت دیتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار امریکہ کی یونیورسٹی آف الباماکے شعبہ طبعیات کے پروفیسر ڈاکٹر محمد مقبول نے پاکستان میں اعلیٰ تعلیم کے معیار کو بڑھانے کیلئے گومل یونیورسٹی میںایک منطقی ماڈل کے حوالے سے ''نو سٹوڈنٹس بیہائنڈماڈل'' سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت گومل یونیورسٹی کے تمام شعبہ جات کے ڈینز، ڈائریکٹر، اساتذہ، سربراہان آن لائن موجود تھے۔ پروفیسر مقبول نے آن لائن سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مجھے خوشی ہوئی ہے کہ ''نو سٹوڈنٹس بیہائنڈماڈل'' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے گومل یونیورسٹی میں نافذ کر دیا پاکستان میں تعلیمی معیار کو بلند کرنے کیلئے دیگر یونیورسٹیوں کو بھی اس ماڈل کو لاگو کرناہوگا۔ انہوںنے مزید کہا کہ میں گومل یونیورسٹی کو بطور مثال استعمال کرتے ہوئے اس بحث کو جاری رکھوں گا کہ اس ماڈل کے نفاذ کیلئے سب سے اہم عنصر مقامی ماحولیات اور طلبہ کو دستیاب سہولیات کا تعین کرنا ہے۔مثال کے طور پر ، وزیرستان جیسے کم وسائل والے علاقوں میں رہنے والے طلبا ء کو جہاں تعلیمی سہولیات اور خصوصا انٹرنیٹ کی سہولت اس طرح میسر نہیں جس طرح اسلام آباد اور پشاورمیں ملتی ہیں ۔اس لئے پاکستان کی ہر یونیورسٹی کو اس ماڈل کو اپنے وسائل کے مطابق لاگو کرنا چاہئے۔اس موقع پر اساتذہ نے مختلف سوالات کرکے ماڈل سے متعلق رہنما ئی بھی حاصل کی ۔ وائس چانسلر نے آخر میں پروفیسر ڈاکٹر محمد مقبول کا شکریہ اداکرتے ہوئے کہا کہ آپ کے قیمتی وقت سے آج ہم سب بہت مستفید ہوئے اور انشاء اللہ ہم طلباء کو بہترین اور اچھی تعلیم فراہم کرنے کیلئے آپ جیسے ماہرین کی رہنمائی ہمیشہ لیتے رہیںگے ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 47 days ago
نو سٹوڈنٹس بیہائنڈ ماڈل پسماندہ وترقی یافتہ سب جگہوں کیلئے سہولیات کے مطابق ایڈجسمنٹ کی اجازت دیتا ہے'پروفیسر مقبول کا گومل یونیورسٹی میں آن لائن سیمینار سے خطاب
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'27جون 2020)نو سٹوڈنٹس بیہائنڈ ماڈل ایسا یونیورسل ماڈل ہے جو پسماندہ اور ترقی یافتہ سب جگہوں کیلئے سہولیات کے مطابق ایڈجسمنٹ کی اجازت دیتا ہے۔ ان خیالات کا اظہار امریکہ کی یونیورسٹی آف الباماکے شعبہ طبعیات کے پروفیسر ڈاکٹر محمد مقبول نے پاکستان میں اعلیٰ تعلیم کے معیار کو بڑھانے کیلئے گومل یونیورسٹی میںایک منطقی ماڈل کے حوالے سے ''نو سٹوڈنٹس بیہائنڈماڈل'' سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت گومل یونیورسٹی کے تمام شعبہ جات کے ڈینز، ڈائریکٹر، اساتذہ، سربراہان آن لائن موجود تھے۔ پروفیسر مقبول نے آن لائن سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مجھے خوشی ہوئی ہے کہ ''نو سٹوڈنٹس بیہائنڈماڈل'' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے گومل یونیورسٹی میں نافذ کر دیا پاکستان میں تعلیمی معیار کو بلند کرنے کیلئے دیگر یونیورسٹیوں کو بھی اس ماڈل کو لاگو کرناہوگا۔ انہوںنے مزید کہا کہ میں گومل یونیورسٹی کو بطور مثال استعمال کرتے ہوئے اس بحث کو جاری رکھوں گا کہ اس ماڈل کے نفاذ کیلئے سب سے اہم عنصر مقامی ماحولیات اور طلبہ کو دستیاب سہولیات کا تعین کرنا ہے۔مثال کے طور پر ، وزیرستان جیسے کم وسائل والے علاقوں میں رہنے والے طلبا ء کو جہاں تعلیمی سہولیات اور خصوصا انٹرنیٹ کی سہولت اس طرح میسر نہیں جس طرح اسلام آباد اور پشاورمیں ملتی ہیں ۔اس لئے پاکستان کی ہر یونیورسٹی کو اس ماڈل کو اپنے وسائل کے مطابق لاگو کرنا چاہئے۔اس موقع پر اساتذہ نے مختلف سوالات کرکے ماڈل سے متعلق رہنما ئی بھی حاصل کی ۔ وائس چانسلر نے آخر میں پروفیسر ڈاکٹر محمد مقبول کا شکریہ اداکرتے ہوئے کہا کہ آپ کے قیمتی وقت سے آج ہم سب بہت مستفید ہوئے اور انشاء اللہ ہم طلباء کو بہترین اور اچھی تعلیم فراہم کرنے کیلئے آپ جیسے ماہرین کی رہنمائی ہمیشہ لیتے رہیںگے ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 50 days ago
میں گومل یونیورسٹی کو پاکستان کے بہترین اداروںمیں لانا چاہتا ہوں اوراس کیلئے خواہ کتنے ہی سخت فیصلے کیوں نہ کرنا پڑیںکرونگا' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ،24جون2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے اساتذہ ' افسران اور ملازمین کی تمام تنظیموں اور گروپوں پر مکمل طور پر پابند ی عائد کر دی۔ تفصیلات کے مطابق وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کی ہدایت پر جاری ہونیوالے نوٹیفیکیشن نمبر2683/2725/GU/Estt: تاریخ19جو ن 2020 کے مطابق خیبرپختونخوایونیورسٹی ایک 2012اور گومل یونیورسٹی کے سٹیچیوٹس 2016 (ترمیم شدہ) کے مطابق گومل یونیورسٹی کے افسران' اساتذہ اور ملازمین کو کسی بھی قسم کی ایسوسی ایشن یا گروپ بندی کی اجازت نہیں ۔وائس چانسلرنے مزید کہا کہ اگرگومل یونیورسٹی کے طلباء کو کسی قسم کی تنظیموں کی اجازت نہیں دیتا تو ملازمین کو بھی اس کی اجازت نہیں دونگا ۔اگر کوئی بھی افسر، استاد 'ملازم یا طالبعلم اس قسم کی تنظیموں یا گروپ بندی میں شامل پایا گیا تو گومل یونیورسٹی کے قوانین کے مطابق اس کے خلاف سخت ترین تادیبی کارروائی کی جائے گی۔ انہی تنظیموں اور گروپس نے اس قدیم مادر علمی کوبہت نقصان پہنچایااور تباہی کے دہانے پر لا کھڑا کیاہے۔جس کی وجہ سے گومل یونیورسٹی کا آج یہ حال ہے اور اس کا سب بڑا نقصان طلباء کے ساتھ ساتھ اس خطے کو بھی ہوا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی میں کام کرنیوالوں کی کمی نہیں مگرایسوسی ایشن اور گروپو ںنے ایسے لوگوں کو ہمیشہ پس پردہ رکھا ہے ۔ میں گومل یونیورسٹی کو پاکستان کے بہترین اداروں میں لانا چاہتا ہوں اس کے لئے مجھے خواہ کتنے ہی سخت فیصلے کیوں نہ کرنا پڑیں کرونگا۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 55 days ago
وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کاایڈمنسٹریشن بلاک کا دورہ
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'19جون 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے اسٹیبلشمنٹ سیکشن' شعبہ فنانس'شعبہ امتحانات ،اکیڈمکس سیکشن سمیت پورے ایڈمنسٹریشن بلاک کا دورہ کیا۔اس موقع پر رجسٹرار طارق محمود بھی ان کے ہمراہ تھے۔ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹرا فتخار احمد نے کہاکہ گومل یونیورسٹی میں خوف کو ختم کردیا ہے تمام ملازمین محنت ، لگن اور ایمانداری سے اپنا اپنا کام کریں اورہر سیکشن اپنا ریکارڈکو مکمل رکھیں اورگومل یونیورسٹی کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کیلئے تمام سٹاف اپنا مثبت کردار ادا کریں۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ شفافیت، ڈسپلن ' اکیڈمک اور ریسرچ کو بہتر کرنا میری ترجیحات ہیں اور اس پر کام تیزی سے شروع ہے۔شفافیت کے قیام کے حوالے سے یونیورسٹی کے تمام دفاتر میں شیشے لگا دیئے ہیں اور ڈپٹی رجسٹرار اور اسسٹنٹ رجسٹرار کے تمام دفاتر کو رجسٹرار کے ساتھ منسلک کرکے اسٹیبلشمنٹ سیکشن کے دفاتر کو ایک ہی جگہ کرنے کی ہدایت کردی ہے تاکہ تمام اسٹیبلشمنٹ سیکشن ایک ہی جگہ ہو اور کام تسلسل اور شفافیت کیساتھ سب کے سامنے ہو ۔وائس چانسلر نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی میں آن لائن کلاسز کا اجراء جاری ہے تاکہ کسی بھی طالب علم کا قیمتی وقت ضائع نہ ہو۔ ڈسپلن کے حوالے سے وائس چانسلرنے کہا کہ ڈسپلن پر کسی بھی قسم کا سمجھوتہ نہیں ہوگا اور کسی کوبھی یونیورسٹی کے ساکھ کو خراب کرنیکی اجازت نہیں دونگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ حالات میں کورونا وائرس سے بچائو کے حوالے سے تمام تر ایس او پیز کوملحوظ خاطر رکھتے ہوئے اکیڈمک کونسل اور خصوصا ملک کی دیگر جامعات سے پہلے سنڈیکیٹ کی بہترین اور کامیابی میٹنگ کا انعقاد کروانا ہمارے لئے فخر کی بات ہے ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 55 days ago
وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کاایڈمنسٹریشن بلاک کا دورہ
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'19جون 2020)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے اسٹیبلشمنٹ سیکشن' شعبہ فنانس'شعبہ امتحانات ،اکیڈمکس سیکشن سمیت پورے ایڈمنسٹریشن بلاک کا دورہ کیا۔اس موقع پر رجسٹرار طارق محمود بھی ان کے ہمراہ تھے۔ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹرا فتخار احمد نے کہاکہ گومل یونیورسٹی میں خوف کو ختم کردیا ہے تمام ملازمین محنت ، لگن اور ایمانداری سے اپنا اپنا کام کریں اورہر سیکشن اپنا ریکارڈکو مکمل رکھیں اورگومل یونیورسٹی کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنے کیلئے تمام سٹاف اپنا مثبت کردار ادا کریں۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ شفافیت، ڈسپلن ' اکیڈمک اور ریسرچ کو بہتر کرنا میری ترجیحات ہیں اور اس پر کام تیزی سے شروع ہے۔شفافیت کے قیام کے حوالے سے یونیورسٹی کے تمام دفاتر میں شیشے لگا دیئے ہیں اور ڈپٹی رجسٹرار اور اسسٹنٹ رجسٹرار کے تمام دفاتر کو رجسٹرار کے ساتھ منسلک کرکے اسٹیبلشمنٹ سیکشن کے دفاتر کو ایک ہی جگہ کرنے کی ہدایت کردی ہے تاکہ تمام اسٹیبلشمنٹ سیکشن ایک ہی جگہ ہو اور کام تسلسل اور شفافیت کیساتھ سب کے سامنے ہو ۔وائس چانسلر نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی میں آن لائن کلاسز کا اجراء جاری ہے تاکہ کسی بھی طالب علم کا قیمتی وقت ضائع نہ ہو۔ ڈسپلن کے حوالے سے وائس چانسلرنے کہا کہ ڈسپلن پر کسی بھی قسم کا سمجھوتہ نہیں ہوگا اور کسی کوبھی یونیورسٹی کے ساکھ کو خراب کرنیکی اجازت نہیں دونگا۔ انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ حالات میں کورونا وائرس سے بچائو کے حوالے سے تمام تر ایس او پیز کوملحوظ خاطر رکھتے ہوئے اکیڈمک کونسل اور خصوصا ملک کی دیگر جامعات سے پہلے سنڈیکیٹ کی بہترین اور کامیابی میٹنگ کا انعقاد کروانا ہمارے لئے فخر کی بات ہے ۔