User Image Raja Alam Zeb Posted 3 photos - 31 days ago
مورخہ09مارچ 2021
گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کاآغاز
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'09مارچ2021)گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس ،وینسم کالج اورسٹی کیمپس میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم شروع کر دی گئی ۔ شجرکاری مہم کا باقاعدہ افتتاح مین کیمپس میں ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن و ڈین زرعی فیکلٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے پودا لگا کرکیا ۔ اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت تمام شعبہ جات کے ڈین، کوراڈینیٹر سٹی کیمپس، پرنسپل وینسم کالج سمیت اساتذہ، ملازمین اور طلباء کی بڑی تعدادشریک تھی۔ شجرکاری مہم کے موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ درخت لگانا صدقہ جاریہ ہے اور یہ خوبصورتی کیساتھ ساتھ ماحول کو خوشگوار بناتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی 'فارم منیجر ڈاکٹر عمرخطاب سدوزئی اور خصوصا ہیڈ باغبان اللہ بخش کے ساتھ ساتھ صفدر'حافظ ساجد ،اللہ وسایا، خلیل، عابد،اللہ نواز، حاجی خان اور دیگر جوگومل یونیورسٹی کو سرسبز و شاداب بنانے کیلئے جس حکمت عملی سے شجرکاری کررہے ہیں وہ قابل دید اور قابل تعریف ہے ۔انہوں نے دن رات ایک کرکے گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس کو خوبصورت اورسرسبز و شاداب بنا دیا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس میں اساتذہ، افسران، ملازمین اور طلبہ ' طالبات سمیت غیر ملکی طلباء جس جذبے سے شجرکاری مہم میں حصہ لے رہے ہیں اس سے خوشی ہو رہی ہے کہ گومل یونیورسٹی میں ہم سب ایک خاندان کی طرح رہتے ہیں ۔شجرکار ی مہم کے دوران گومل یونیورسٹی کے مین ، وینسم کالج اور سٹی کیمپس میںبسمارکیا پام، وال پام،املتاس،کیشیا گلاکا، ٹرمینیلیلا،سنبل' وغیرہ کے 10ہزار پودے لگا ئے گئے ہیں۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭تصویر کی کیپشن
ڈیرہ اسماعیل خان: گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کے آغاز کے موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار کی قیادت میں ریلی نکالی جا رہی ہے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭تصویر کی کیپشن
ڈیرہ اسماعیل خان: ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کا افتتاح کررہے ہیں اس موقع پر وائس چانسلرگومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت تمام ڈین ، اساتذہ، ملاز
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 31 days ago
مورخہ09مارچ 2021
گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کاآغاز
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'09مارچ2021)گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس ،وینسم کالج اورسٹی کیمپس میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم شروع کر دی گئی ۔ شجرکاری مہم کا باقاعدہ افتتاح مین کیمپس میں ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن و ڈین زرعی فیکلٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے پودا لگا کرکیا ۔ اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت تمام شعبہ جات کے ڈین، کوراڈینیٹر سٹی کیمپس، پرنسپل وینسم کالج سمیت اساتذہ، ملازمین اور طلباء کی بڑی تعدادشریک تھی۔ شجرکاری مہم کے موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ درخت لگانا صدقہ جاریہ ہے اور یہ خوبصورتی کیساتھ ساتھ ماحول کو خوشگوار بناتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی 'فارم منیجر ڈاکٹر عمرخطاب سدوزئی اور خصوصا ہیڈ باغبان اللہ بخش کے ساتھ ساتھ صفدر'حافظ ساجد ،اللہ وسایا، خلیل، عابد،اللہ نواز، حاجی خان اور دیگر جوگومل یونیورسٹی کو سرسبز و شاداب بنانے کیلئے جس حکمت عملی سے شجرکاری کررہے ہیں وہ قابل دید اور قابل تعریف ہے ۔انہوں نے دن رات ایک کرکے گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس کو خوبصورت اورسرسبز و شاداب بنا دیا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس میں اساتذہ، افسران، ملازمین اور طلبہ ' طالبات سمیت غیر ملکی طلباء جس جذبے سے شجرکاری مہم میں حصہ لے رہے ہیں اس سے خوشی ہو رہی ہے کہ گومل یونیورسٹی میں ہم سب ایک خاندان کی طرح رہتے ہیں ۔شجرکار ی مہم کے دوران گومل یونیورسٹی کے مین ، وینسم کالج اور سٹی کیمپس میںبسمارکیا پام، وال پام،املتاس،کیشیا گلاکا، ٹرمینیلیلا،سنبل' وغیرہ کے 10ہزار پودے لگا ئے گئے ہیں۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭تصویر کی کیپشن
ڈیرہ اسماعیل خان: گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کے آغاز کے موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار کی قیادت میں ریلی نکالی جا رہی ہے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭تصویر کی کیپشن
ڈیرہ اسماعیل خان: ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کا افتتاح کررہے ہیں اس موقع پر وائس چانسلرگومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت تمام ڈین ، اساتذہ، ملاز
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 31 days ago
مورخہ09مارچ 2021
گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کاآغاز
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'09مارچ2021)گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس ،وینسم کالج اورسٹی کیمپس میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم شروع کر دی گئی ۔ شجرکاری مہم کا باقاعدہ افتتاح مین کیمپس میں ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن و ڈین زرعی فیکلٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے پودا لگا کرکیا ۔ اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت تمام شعبہ جات کے ڈین، کوراڈینیٹر سٹی کیمپس، پرنسپل وینسم کالج سمیت اساتذہ، ملازمین اور طلباء کی بڑی تعدادشریک تھی۔ شجرکاری مہم کے موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ درخت لگانا صدقہ جاریہ ہے اور یہ خوبصورتی کیساتھ ساتھ ماحول کو خوشگوار بناتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی 'فارم منیجر ڈاکٹر عمرخطاب سدوزئی اور خصوصا ہیڈ باغبان اللہ بخش کے ساتھ ساتھ صفدر'حافظ ساجد ،اللہ وسایا، خلیل، عابد،اللہ نواز، حاجی خان اور دیگر جوگومل یونیورسٹی کو سرسبز و شاداب بنانے کیلئے جس حکمت عملی سے شجرکاری کررہے ہیں وہ قابل دید اور قابل تعریف ہے ۔انہوں نے دن رات ایک کرکے گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس کو خوبصورت اورسرسبز و شاداب بنا دیا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس میں اساتذہ، افسران، ملازمین اور طلبہ ' طالبات سمیت غیر ملکی طلباء جس جذبے سے شجرکاری مہم میں حصہ لے رہے ہیں اس سے خوشی ہو رہی ہے کہ گومل یونیورسٹی میں ہم سب ایک خاندان کی طرح رہتے ہیں ۔شجرکار ی مہم کے دوران گومل یونیورسٹی کے مین ، وینسم کالج اور سٹی کیمپس میںبسمارکیا پام، وال پام،املتاس،کیشیا گلاکا، ٹرمینیلیلا،سنبل' وغیرہ کے 10ہزار پودے لگا ئے گئے ہیں۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭تصویر کی کیپشن
ڈیرہ اسماعیل خان: گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کے آغاز کے موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار کی قیادت میں ریلی نکالی جا رہی ہے
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭تصویر کی کیپشن
ڈیرہ اسماعیل خان: ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کا افتتاح کررہے ہیں اس موقع پر وائس چانسلرگومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت تمام ڈین ، اساتذہ، ملاز
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 31 days ago
مورخہ09مارچ 2021
گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کاآغاز
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'09مارچ2021)گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس ،وینسم کالج اورسٹی کیمپس میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم شروع کر دی گئی ۔ شجرکاری مہم کا باقاعدہ افتتاح مین کیمپس میں ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن و ڈین زرعی فیکلٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے پودا لگا کرکیا ۔ اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت تمام شعبہ جات کے ڈین، کوراڈینیٹر سٹی کیمپس، پرنسپل وینسم کالج سمیت اساتذہ، ملازمین اور طلباء کی بڑی تعدادشریک تھی۔ شجرکاری مہم کے موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ درخت لگانا صدقہ جاریہ ہے اور یہ خوبصورتی کیساتھ ساتھ ماحول کو خوشگوار بناتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی 'فارم منیجر ڈاکٹر عمرخطاب سدوزئی اور خصوصا ہیڈ باغبان اللہ بخش کے ساتھ ساتھ صفدر'حافظ ساجد ،اللہ وسایا، خلیل، عابد،اللہ نواز، حاجی خان اور دیگر جوگومل یونیورسٹی کو سرسبز و شاداب بنانے کیلئے جس حکمت عملی سے شجرکاری کررہے ہیں وہ قابل دید اور قابل تعریف ہے ۔انہوں نے دن رات ایک کرکے گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس کو خوبصورت اورسرسبز و شاداب بنا دیا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس میں اساتذہ، افسران، ملازمین اور طلبہ ' طالبات سمیت غیر ملکی طلباء جس جذبے سے شجرکاری مہم میں حصہ لے رہے ہیں اس سے خوشی ہو رہی ہے کہ گومل یونیورسٹی میں ہم سب ایک خاندان کی طرح رہتے ہیں ۔شجرکار ی مہم کے دوران گومل یونیورسٹی کے مین ، وینسم کالج اور سٹی کیمپس میںبسمارکیا پام، وال پام،املتاس،کیشیا گلاکا، ٹرمینیلیلا،سنبل' وغیرہ کے 10ہزار پودے لگا ئے گئے ہیں۔
از طرف !راجہ عالم زیب
پی آر او گومل یونیورسٹی ، ڈیرہ اسماعیل خان

 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 31 days ago
مورخہ09مارچ 2021
گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کاآغاز
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'09مارچ2021)گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس ،وینسم کالج اورسٹی کیمپس میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم شروع کر دی گئی ۔ شجرکاری مہم کا باقاعدہ افتتاح مین کیمپس میں ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن و ڈین زرعی فیکلٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے پودا لگا کرکیا ۔ اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت تمام شعبہ جات کے ڈین، کوراڈینیٹر سٹی کیمپس، پرنسپل وینسم کالج سمیت اساتذہ، ملازمین اور طلباء کی بڑی تعدادشریک تھی۔ شجرکاری مہم کے موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ درخت لگانا صدقہ جاریہ ہے اور یہ خوبصورتی کیساتھ ساتھ ماحول کو خوشگوار بناتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی 'فارم منیجر ڈاکٹر عمرخطاب سدوزئی اور خصوصا ہیڈ باغبان اللہ بخش کے ساتھ ساتھ صفدر'حافظ ساجد ،اللہ وسایا، خلیل، عابد،اللہ نواز، حاجی خان اور دیگر جوگومل یونیورسٹی کو سرسبز و شاداب بنانے کیلئے جس حکمت عملی سے شجرکاری کررہے ہیں وہ قابل دید اور قابل تعریف ہے ۔انہوں نے دن رات ایک کرکے گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس کو خوبصورت اورسرسبز و شاداب بنا دیا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس میں اساتذہ، افسران، ملازمین اور طلبہ ' طالبات سمیت غیر ملکی طلباء جس جذبے سے شجرکاری مہم میں حصہ لے رہے ہیں اس سے خوشی ہو رہی ہے کہ گومل یونیورسٹی میں ہم سب ایک خاندان کی طرح رہتے ہیں ۔شجرکار ی مہم کے دوران گومل یونیورسٹی کے مین ، وینسم کالج اور سٹی کیمپس میںبسمارکیا پام، وال پام،املتاس،کیشیا گلاکا، ٹرمینیلیلا،سنبل' وغیرہ کے 10ہزار پودے لگا ئے گئے ہیں۔
از طرف !راجہ عالم زیب
پی آر او گومل یونیورسٹی ، ڈیرہ اسماعیل خان

 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 31 days ago
مورخہ09مارچ 2021
گومل یونیورسٹی میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم کاآغاز
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'09مارچ2021)گومل یونیورسٹی کے مین کیمپس ،وینسم کالج اورسٹی کیمپس میں تاریخ کی سب سے بڑی شجرکاری مہم شروع کر دی گئی ۔ شجرکاری مہم کا باقاعدہ افتتاح مین کیمپس میں ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن و ڈین زرعی فیکلٹی پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے پودا لگا کرکیا ۔ اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد سمیت تمام شعبہ جات کے ڈین، کوراڈینیٹر سٹی کیمپس، پرنسپل وینسم کالج سمیت اساتذہ، ملازمین اور طلباء کی بڑی تعدادشریک تھی۔ شجرکاری مہم کے موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ درخت لگانا صدقہ جاریہ ہے اور یہ خوبصورتی کیساتھ ساتھ ماحول کو خوشگوار بناتا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی 'فارم منیجر ڈاکٹر عمرخطاب سدوزئی اور خصوصا ہیڈ باغبان اللہ بخش کے ساتھ ساتھ صفدر'حافظ ساجد ،اللہ وسایا، خلیل، عابد،اللہ نواز، حاجی خان اور دیگر جوگومل یونیورسٹی کو سرسبز و شاداب بنانے کیلئے جس حکمت عملی سے شجرکاری کررہے ہیں وہ قابل دید اور قابل تعریف ہے ۔انہوں نے دن رات ایک کرکے گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس کو خوبصورت اورسرسبز و شاداب بنا دیا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی کے تمام کیمپس میں اساتذہ، افسران، ملازمین اور طلبہ ' طالبات سمیت غیر ملکی طلباء جس جذبے سے شجرکاری مہم میں حصہ لے رہے ہیں اس سے خوشی ہو رہی ہے کہ گومل یونیورسٹی میں ہم سب ایک خاندان کی طرح رہتے ہیں ۔شجرکار ی مہم کے دوران گومل یونیورسٹی کے مین ، وینسم کالج اور سٹی کیمپس میںبسمارکیا پام، وال پام،املتاس،کیشیا گلاکا، ٹرمینیلیلا،سنبل' وغیرہ کے 10ہزار پودے لگا ئے گئے ہیں۔
از طرف !راجہ عالم زیب
پی آر او گومل یونیورسٹی ، ڈیرہ اسماعیل خان

 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 39 days ago
مورخہ08مارچ 2021
طلباء کیلئے تعلیم کیساتھ ساتھ جسمانی نشوونما بھی بہت ضروری ہیں'وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'08مارچ2021)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے شعبہ انگریزی میں سپورٹس گالا کاافتتاح کر دیا۔ اس موقع پر ڈائریکٹر ڈیپارٹمنٹ آف انگلش لینگویج اینڈ لیٹریچر احسان اللہ دانش 'ڈاکٹر اعظم خان علی زئی'کوراڈینیٹر سٹی کیمپس ڈاکٹر شکیب ،چیف پراکٹر سمیع اللہ خان'انچار ج ڈائریکٹوریٹ آف سوسائیٹیز ثناء خان سمیت اساتذہ اور طلباء کی بڑ ی تعداد شریک تھی۔ اس موقع پر وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ طلباء کیلئے تعلیم کیساتھ ساتھ جسمانی نشوونما بھی بہت ضروری ہیں اور اس طرح کے سپورٹس گالا کا انعقادطلباء کو جسمانی طور پر بھی تندرست رکھتا ہے ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ جن علاقوں میں کھیلوں کے میدان آباد ہوتے ہیں وہاں کے ہسپتال ویران ہوتے ہیں اور کھیلوںمیں حصہ لینے والے منشیات جیسی لعنت سے بھی دور رہتے ہیں ۔ڈائریکٹر شعبہ انگریزی احسان اللہ دانش نے کہا کہ سپورٹس گالا کا انعقاد کروانے پر ہم وائس چانسلر کے مشکور ہیں جن کی وجہ سے طلباء کو تعلیم کیساتھ ساتھ صحت مندانہ سرگرمیوںمیں حصہ لینے کا موقع ملتا ہے۔ احسان اللہ دانش نے مزید کہا کہ سپورٹس گالا میں کرکٹ، فٹبال، والی بال،ہاکی سمیت تمام کھیلوں کا انعقاد ہو گا اور رنگا رنگ اختتامی تقریب 12مارچ2021کوہو گی۔ اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے فٹبال کو ہٹ مار کر سپورٹس گالا کا افتتاح کیا۔
٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭
گومل یونیورسٹی میں خواتین اساتذہ، ملازمین اور طلباء کو جو تحفظ ملا ہے وہ دیگر یونیورسٹیوں کیلئے ایک ماڈل ہے 'پروفیسر ڈاکٹر تبسم ناصر
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'08مارچ2021)گومل یونیورسٹی میںخواتین کے عالمی دن کے حوالے سے تقریب کا انعقاد کیا گیا۔ جس کی صدارت ڈین فیکلٹی آف انجنیئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی پروفیسر ڈاکٹر تبسم ناصر نے کی ۔ پروگرام کا انعقاد انچارج ڈائریکٹوریٹ آف سوسائیٹز ثناء خان نے کیا۔ پروفیسر ڈاکٹر تبسم ناصر نے کہا کہ جس طرح گومل یونیورسٹی میں خواتین کو بااختیار بنایا گیا ہے اس کی مثال نہیں ملتی اس کا تمام کریڈیٹ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد کو جاتا ہے ۔ ڈاکٹر تبسم نے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی میں خواتین اساتذہ،
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 44 days ago
مورخہ03مارچ 2021
طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیںاور گومل یونیورسٹی اس امید پر پورا اتر رہی ہے' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'03مارچ2021)کوئی بھی نظام خود بہتر اور تبدیل نہیں ہوتا ۔ نظام کی تبدیلی کیلئے سب کو مل کر کام کرنا ہوتا ہے۔ ان خیالات کاا ظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے نئی شروع ہونیوالی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقع پر کوارڈینیٹر فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن ،فیکلٹی ممبران اورطلباء کی بڑی تعداد موجود تھی ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ مجھے خوشی ہو رہی ہے کہ آج گومل یونیورسٹی میں ایک نئی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسزکاافتتاح کر دیا گیا ہے جو وقت کی ضرورت تھی۔ اس فیکلٹی میںڈی پی ٹی ، ایم ایل ٹی،بی ایس انٹینسو کیئر یونٹ،بی ایس ڈینٹل ٹیکنالوجی شروع کردی گئی ہے ۔جونہ صرف یونیورسٹی بلکہ علاقے اور ملک کی ترقی میں بھی اہم کردار ادا کریگی۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ جب میں ڈیرہ اسماعیل خان میں آیا تو میں نے محسوس کیا کہ یہاں وقت کی ضرورت کے مطابق ان پروگراموں کو شروع کیا اور ایسے پروگرام شروع کرنے کے بعد یہاں کے طلباء کو نوکریوں کی ضرورت نہیں ہو گی اور وہ اپنے کاروبار شروع کر سکیں گے ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہم یونیورسٹی کے وسائل بہترین طریقے سے استعمال کریں گے کیونکہ اگر آپ کے پاس وسائل ہوں اور آپ ان کو استعمال نہ کریں تو یہ زیادتی ہو گی۔ اس لئے گومل یونیورسٹی میں انشاء اللہ جلد ہی بی ایس سرائیکی، بی ایس پشتو، بی ایس اردو اوربی ایس آرکیالوجی کے پروگرام بھی شروع کرنے جا رہے ہیںاور اس کے ساتھ ساتھ نرسنگ کالج کا اجراء بھی جلد ہو گا۔ ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیں کیونکہ طلباء کے والدین اپنے بچوں کی کامیابی چاہتے ہیں اور ہم یہاں تعلیم کیساتھ ساتھ طلباء کی تربیت کرکے ان کوزندگی میں آنیوالے امتحانات کے مقابلے کیلئے بھی تیار کرتے ہیں۔ اور اس تمام کیلئے نظم و ضبط کی ضرورت ہوتی ہے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کوارڈینیٹر فیکلٹی آف ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن خان کی کاوشوں کو سراہاکہ انہوں نے نہایت ہی کم وق
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 44 days ago
مورخہ03مارچ 2021
طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیںاور گومل یونیورسٹی اس امید پر پورا اتر رہی ہے' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'03مارچ2021)کوئی بھی نظام خود بہتر اور تبدیل نہیں ہوتا ۔ نظام کی تبدیلی کیلئے سب کو مل کر کام کرنا ہوتا ہے۔ ان خیالات کاا ظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے نئی شروع ہونیوالی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقع پر کوارڈینیٹر فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن ،فیکلٹی ممبران اورطلباء کی بڑی تعداد موجود تھی ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ مجھے خوشی ہو رہی ہے کہ آج گومل یونیورسٹی میں ایک نئی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسزکاافتتاح کر دیا گیا ہے جو وقت کی ضرورت تھی۔ اس فیکلٹی میںڈی پی ٹی ، ایم ایل ٹی،بی ایس انٹینسو کیئر یونٹ،بی ایس ڈینٹل ٹیکنالوجی شروع کردی گئی ہے ۔جونہ صرف یونیورسٹی بلکہ علاقے اور ملک کی ترقی میں بھی اہم کردار ادا کریگی۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ جب میں ڈیرہ اسماعیل خان میں آیا تو میں نے محسوس کیا کہ یہاں وقت کی ضرورت کے مطابق ان پروگراموں کو شروع کیا اور ایسے پروگرام شروع کرنے کے بعد یہاں کے طلباء کو نوکریوں کی ضرورت نہیں ہو گی اور وہ اپنے کاروبار شروع کر سکیں گے ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہم یونیورسٹی کے وسائل بہترین طریقے سے استعمال کریں گے کیونکہ اگر آپ کے پاس وسائل ہوں اور آپ ان کو استعمال نہ کریں تو یہ زیادتی ہو گی۔ اس لئے گومل یونیورسٹی میں انشاء اللہ جلد ہی بی ایس سرائیکی، بی ایس پشتو، بی ایس اردو اوربی ایس آرکیالوجی کے پروگرام بھی شروع کرنے جا رہے ہیںاور اس کے ساتھ ساتھ نرسنگ کالج کا اجراء بھی جلد ہو گا۔ ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیں کیونکہ طلباء کے والدین اپنے بچوں کی کامیابی چاہتے ہیں اور ہم یہاں تعلیم کیساتھ ساتھ طلباء کی تربیت کرکے ان کوزندگی میں آنیوالے امتحانات کے مقابلے کیلئے بھی تیار کرتے ہیں۔ اور اس تمام کیلئے نظم و ضبط کی ضرورت ہوتی ہے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کوارڈینیٹر فیکلٹی آف ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن خان کی کاوشوں کو سراہاکہ انہوں نے نہایت ہی کم وق
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 44 days ago
مورخہ03مارچ 2021
طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیںاور گومل یونیورسٹی اس امید پر پورا اتر رہی ہے' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'03مارچ2021)کوئی بھی نظام خود بہتر اور تبدیل نہیں ہوتا ۔ نظام کی تبدیلی کیلئے سب کو مل کر کام کرنا ہوتا ہے۔ ان خیالات کاا ظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے نئی شروع ہونیوالی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقع پر کوارڈینیٹر فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن ،فیکلٹی ممبران اورطلباء کی بڑی تعداد موجود تھی ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ مجھے خوشی ہو رہی ہے کہ آج گومل یونیورسٹی میں ایک نئی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسزکاافتتاح کر دیا گیا ہے جو وقت کی ضرورت تھی۔ اس فیکلٹی میںڈی پی ٹی ، ایم ایل ٹی،بی ایس انٹینسو کیئر یونٹ،بی ایس ڈینٹل ٹیکنالوجی شروع کردی گئی ہے ۔جونہ صرف یونیورسٹی بلکہ علاقے اور ملک کی ترقی میں بھی اہم کردار ادا کریگی۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ جب میں ڈیرہ اسماعیل خان میں آیا تو میں نے محسوس کیا کہ یہاں وقت کی ضرورت کے مطابق ان پروگراموں کو شروع کیا اور ایسے پروگرام شروع کرنے کے بعد یہاں کے طلباء کو نوکریوں کی ضرورت نہیں ہو گی اور وہ اپنے کاروبار شروع کر سکیں گے ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہم یونیورسٹی کے وسائل بہترین طریقے سے استعمال کریں گے کیونکہ اگر آپ کے پاس وسائل ہوں اور آپ ان کو استعمال نہ کریں تو یہ زیادتی ہو گی۔ اس لئے گومل یونیورسٹی میں انشاء اللہ جلد ہی بی ایس سرائیکی، بی ایس پشتو، بی ایس اردو اوربی ایس آرکیالوجی کے پروگرام بھی شروع کرنے جا رہے ہیںاور اس کے ساتھ ساتھ نرسنگ کالج کا اجراء بھی جلد ہو گا۔ ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیں کیونکہ طلباء کے والدین اپنے بچوں کی کامیابی چاہتے ہیں اور ہم یہاں تعلیم کیساتھ ساتھ طلباء کی تربیت کرکے ان کوزندگی میں آنیوالے امتحانات کے مقابلے کیلئے بھی تیار کرتے ہیں۔ اور اس تمام کیلئے نظم و ضبط کی ضرورت ہوتی ہے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کوارڈینیٹر فیکلٹی آف ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن خان کی کاوشوں کو سراہاکہ انہوں نے نہایت ہی کم وق
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 44 days ago
مورخہ03مارچ 2021
طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیںاور گومل یونیورسٹی اس امید پر پورا اتر رہی ہے' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'03مارچ2021)کوئی بھی نظام خود بہتر اور تبدیل نہیں ہوتا ۔ نظام کی تبدیلی کیلئے سب کو مل کر کام کرنا ہوتا ہے۔ ان خیالات کاا ظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے نئی شروع ہونیوالی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقع پر کوارڈینیٹر فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن ،فیکلٹی ممبران اورطلباء کی بڑی تعداد موجود تھی ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ مجھے خوشی ہو رہی ہے کہ آج گومل یونیورسٹی میں ایک نئی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسزکاافتتاح کر دیا گیا ہے جو وقت کی ضرورت تھی۔ اس فیکلٹی میںڈی پی ٹی ، ایم ایل ٹی،بی ایس انٹینسو کیئر یونٹ،بی ایس ڈینٹل ٹیکنالوجی شروع کردی گئی ہے ۔جونہ صرف یونیورسٹی بلکہ علاقے اور ملک کی ترقی میں بھی اہم کردار ادا کریگی۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ جب میں ڈیرہ اسماعیل خان میں آیا تو میں نے محسوس کیا کہ یہاں وقت کی ضرورت کے مطابق ان پروگراموں کو شروع کیا اور ایسے پروگرام شروع کرنے کے بعد یہاں کے طلباء کو نوکریوں کی ضرورت نہیں ہو گی اور وہ اپنے کاروبار شروع کر سکیں گے ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہم یونیورسٹی کے وسائل بہترین طریقے سے استعمال کریں گے کیونکہ اگر آپ کے پاس وسائل ہوں اور آپ ان کو استعمال نہ کریں تو یہ زیادتی ہو گی۔ اس لئے گومل یونیورسٹی میں انشاء اللہ جلد ہی بی ایس سرائیکی، بی ایس پشتو، بی ایس اردو اوربی ایس آرکیالوجی کے پروگرام بھی شروع کرنے جا رہے ہیںاور اس کے ساتھ ساتھ نرسنگ کالج کا اجراء بھی جلد ہو گا۔ ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیں کیونکہ طلباء کے والدین اپنے بچوں کی کامیابی چاہتے ہیں اور ہم یہاں تعلیم کیساتھ ساتھ طلباء کی تربیت کرکے ان کوزندگی میں آنیوالے امتحانات کے مقابلے کیلئے بھی تیار کرتے ہیں۔ اور اس تمام کیلئے نظم و ضبط کی ضرورت ہوتی ہے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کوارڈینیٹر فیکلٹی آف ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن خان کی کاوشوں کو سراہاکہ انہوں نے نہایت ہی کم وق
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 44 days ago
مورخہ03مارچ 2021
طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیںاور گومل یونیورسٹی اس امید پر پورا اتر رہی ہے' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'03مارچ2021)کوئی بھی نظام خود بہتر اور تبدیل نہیں ہوتا ۔ نظام کی تبدیلی کیلئے سب کو مل کر کام کرنا ہوتا ہے۔ ان خیالات کاا ظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے نئی شروع ہونیوالی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقع پر کوارڈینیٹر فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن ،فیکلٹی ممبران اورطلباء کی بڑی تعداد موجود تھی ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ مجھے خوشی ہو رہی ہے کہ آج گومل یونیورسٹی میں ایک نئی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسزکاافتتاح کر دیا گیا ہے جو وقت کی ضرورت تھی۔ اس فیکلٹی میںڈی پی ٹی ، ایم ایل ٹی،بی ایس انٹینسو کیئر یونٹ،بی ایس ڈینٹل ٹیکنالوجی شروع کردی گئی ہے ۔جونہ صرف یونیورسٹی بلکہ علاقے اور ملک کی ترقی میں بھی اہم کردار ادا کریگی۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ جب میں ڈیرہ اسماعیل خان میں آیا تو میں نے محسوس کیا کہ یہاں وقت کی ضرورت کے مطابق ان پروگراموں کو شروع کیا اور ایسے پروگرام شروع کرنے کے بعد یہاں کے طلباء کو نوکریوں کی ضرورت نہیں ہو گی اور وہ اپنے کاروبار شروع کر سکیں گے ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہم یونیورسٹی کے وسائل بہترین طریقے سے استعمال کریں گے کیونکہ اگر آپ کے پاس وسائل ہوں اور آپ ان کو استعمال نہ کریں تو یہ زیادتی ہو گی۔ اس لئے گومل یونیورسٹی میں انشاء اللہ جلد ہی بی ایس سرائیکی، بی ایس پشتو، بی ایس اردو اوربی ایس آرکیالوجی کے پروگرام بھی شروع کرنے جا رہے ہیںاور اس کے ساتھ ساتھ نرسنگ کالج کا اجراء بھی جلد ہو گا۔ ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیں کیونکہ طلباء کے والدین اپنے بچوں کی کامیابی چاہتے ہیں اور ہم یہاں تعلیم کیساتھ ساتھ طلباء کی تربیت کرکے ان کوزندگی میں آنیوالے امتحانات کے مقابلے کیلئے بھی تیار کرتے ہیں۔ اور اس تمام کیلئے نظم و ضبط کی ضرورت ہوتی ہے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کوارڈینیٹر فیکلٹی آف ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن خان کی کاوشوں کو سراہاکہ انہوں نے نہایت ہی کم وق
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 44 days ago
مورخہ03مارچ 2021
طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیںاور گومل یونیورسٹی اس امید پر پورا اتر رہی ہے' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'03مارچ2021)کوئی بھی نظام خود بہتر اور تبدیل نہیں ہوتا ۔ نظام کی تبدیلی کیلئے سب کو مل کر کام کرنا ہوتا ہے۔ ان خیالات کاا ظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے نئی شروع ہونیوالی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقع پر کوارڈینیٹر فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن ،فیکلٹی ممبران اورطلباء کی بڑی تعداد موجود تھی ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ مجھے خوشی ہو رہی ہے کہ آج گومل یونیورسٹی میں ایک نئی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسزکاافتتاح کر دیا گیا ہے جو وقت کی ضرورت تھی۔ اس فیکلٹی میںڈی پی ٹی ، ایم ایل ٹی،بی ایس انٹینسو کیئر یونٹ،بی ایس ڈینٹل ٹیکنالوجی شروع کردی گئی ہے ۔جونہ صرف یونیورسٹی بلکہ علاقے اور ملک کی ترقی میں بھی اہم کردار ادا کریگی۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ جب میں ڈیرہ اسماعیل خان میں آیا تو میں نے محسوس کیا کہ یہاں وقت کی ضرورت کے مطابق ان پروگراموں کو شروع کیا اور ایسے پروگرام شروع کرنے کے بعد یہاں کے طلباء کو نوکریوں کی ضرورت نہیں ہو گی اور وہ اپنے کاروبار شروع کر سکیں گے ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہم یونیورسٹی کے وسائل بہترین طریقے سے استعمال کریں گے کیونکہ اگر آپ کے پاس وسائل ہوں اور آپ ان کو استعمال نہ کریں تو یہ زیادتی ہو گی۔ اس لئے گومل یونیورسٹی میں انشاء اللہ جلد ہی بی ایس سرائیکی، بی ایس پشتو، بی ایس اردو اوربی ایس آرکیالوجی کے پروگرام بھی شروع کرنے جا رہے ہیںاور اس کے ساتھ ساتھ نرسنگ کالج کا اجراء بھی جلد ہو گا۔ ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیں کیونکہ طلباء کے والدین اپنے بچوں کی کامیابی چاہتے ہیں اور ہم یہاں تعلیم کیساتھ ساتھ طلباء کی تربیت کرکے ان کوزندگی میں آنیوالے امتحانات کے مقابلے کیلئے بھی تیار کرتے ہیں۔ اور اس تمام کیلئے نظم و ضبط کی ضرورت ہوتی ہے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کوارڈینیٹر فیکلٹی آف ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن خان کی کاوشوں کو سراہاکہ انہوں نے نہایت ہی کم وق
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 44 days ago
مورخہ03مارچ 2021
طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیںاور گومل یونیورسٹی اس امید پر پورا اتر رہی ہے' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'03مارچ2021)کوئی بھی نظام خود بہتر اور تبدیل نہیں ہوتا ۔ نظام کی تبدیلی کیلئے سب کو مل کر کام کرنا ہوتا ہے۔ ان خیالات کاا ظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے نئی شروع ہونیوالی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقع پر کوارڈینیٹر فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن ،فیکلٹی ممبران اورطلباء کی بڑی تعداد موجود تھی ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ مجھے خوشی ہو رہی ہے کہ آج گومل یونیورسٹی میں ایک نئی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسزکاافتتاح کر دیا گیا ہے جو وقت کی ضرورت تھی۔ اس فیکلٹی میںڈی پی ٹی ، ایم ایل ٹی،بی ایس انٹینسو کیئر یونٹ،بی ایس ڈینٹل ٹیکنالوجی شروع کردی گئی ہے ۔جونہ صرف یونیورسٹی بلکہ علاقے اور ملک کی ترقی میں بھی اہم کردار ادا کریگی۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ جب میں ڈیرہ اسماعیل خان میں آیا تو میں نے محسوس کیا کہ یہاں وقت کی ضرورت کے مطابق ان پروگراموں کو شروع کیا اور ایسے پروگرام شروع کرنے کے بعد یہاں کے طلباء کو نوکریوں کی ضرورت نہیں ہو گی اور وہ اپنے کاروبار شروع کر سکیں گے ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہم یونیورسٹی کے وسائل بہترین طریقے سے استعمال کریں گے کیونکہ اگر آپ کے پاس وسائل ہوں اور آپ ان کو استعمال نہ کریں تو یہ زیادتی ہو گی۔ اس لئے گومل یونیورسٹی میں انشاء اللہ جلد ہی بی ایس سرائیکی، بی ایس پشتو، بی ایس اردو اوربی ایس آرکیالوجی کے پروگرام بھی شروع کرنے جا رہے ہیںاور اس کے ساتھ ساتھ نرسنگ کالج کا اجراء بھی جلد ہو گا۔ ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیں کیونکہ طلباء کے والدین اپنے بچوں کی کامیابی چاہتے ہیں اور ہم یہاں تعلیم کیساتھ ساتھ طلباء کی تربیت کرکے ان کوزندگی میں آنیوالے امتحانات کے مقابلے کیلئے بھی تیار کرتے ہیں۔ اور اس تمام کیلئے نظم و ضبط کی ضرورت ہوتی ہے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کوارڈینیٹر فیکلٹی آف ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن خان کی کاوشوں کو سراہاکہ انہوں نے نہایت ہی کم وق
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 44 days ago
مورخہ03مارچ 2021
طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیںاور گومل یونیورسٹی اس امید پر پورا اتر رہی ہے' وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'03مارچ2021)کوئی بھی نظام خود بہتر اور تبدیل نہیں ہوتا ۔ نظام کی تبدیلی کیلئے سب کو مل کر کام کرنا ہوتا ہے۔ ان خیالات کاا ظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے نئی شروع ہونیوالی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقع پر کوارڈینیٹر فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن ،فیکلٹی ممبران اورطلباء کی بڑی تعداد موجود تھی ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ مجھے خوشی ہو رہی ہے کہ آج گومل یونیورسٹی میں ایک نئی فیکلٹی آف الائیڈ ہیلتھ سائنسزکاافتتاح کر دیا گیا ہے جو وقت کی ضرورت تھی۔ اس فیکلٹی میںڈی پی ٹی ، ایم ایل ٹی،بی ایس انٹینسو کیئر یونٹ،بی ایس ڈینٹل ٹیکنالوجی شروع کردی گئی ہے ۔جونہ صرف یونیورسٹی بلکہ علاقے اور ملک کی ترقی میں بھی اہم کردار ادا کریگی۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ جب میں ڈیرہ اسماعیل خان میں آیا تو میں نے محسوس کیا کہ یہاں وقت کی ضرورت کے مطابق ان پروگراموں کو شروع کیا اور ایسے پروگرام شروع کرنے کے بعد یہاں کے طلباء کو نوکریوں کی ضرورت نہیں ہو گی اور وہ اپنے کاروبار شروع کر سکیں گے ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ہم یونیورسٹی کے وسائل بہترین طریقے سے استعمال کریں گے کیونکہ اگر آپ کے پاس وسائل ہوں اور آپ ان کو استعمال نہ کریں تو یہ زیادتی ہو گی۔ اس لئے گومل یونیورسٹی میں انشاء اللہ جلد ہی بی ایس سرائیکی، بی ایس پشتو، بی ایس اردو اوربی ایس آرکیالوجی کے پروگرام بھی شروع کرنے جا رہے ہیںاور اس کے ساتھ ساتھ نرسنگ کالج کا اجراء بھی جلد ہو گا۔ ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ طلباء اور ان کے والدین یونیورسٹیوں سے نظم و ضبط کی امید رکھتے ہیں کیونکہ طلباء کے والدین اپنے بچوں کی کامیابی چاہتے ہیں اور ہم یہاں تعلیم کیساتھ ساتھ طلباء کی تربیت کرکے ان کوزندگی میں آنیوالے امتحانات کے مقابلے کیلئے بھی تیار کرتے ہیں۔ اور اس تمام کیلئے نظم و ضبط کی ضرورت ہوتی ہے۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کوارڈینیٹر فیکلٹی آف ہیلتھ سائنسز ڈاکٹر فضل الرحمن خان کی کاوشوں کو سراہاکہ انہوں نے نہایت ہی کم وق
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 44 days ago
گومل یونیورسٹی کے ٹرانسپورٹ سیکشن کی تین پرانی بسوں کو تمام ترقانونی تقاضوں کے بعد نہایت ہی کم اخراجات پر تزئین و آرائش کے بعد استعمال کے قابل بنا دیا گیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'راجہ عالم زیب ،پبلسٹی آفیسر)گومل یونیورسٹی کے ٹرانسپورٹ سیکشن کی تین پرانی بسوں کو تمام ترقانونی تقاضوں کے بعد نہایت ہی کم اخراجات پر تزئین و آرائش کے بعد استعمال کے قابل بنا دیا گیا اس موقع پر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے فیتہ کاٹ کر بسوں کا باقاعدہ افتتاح کیا۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات کے ڈین 'ڈائریکٹر فنانس، ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ سمیت دیگر ملازمین ،ڈرائیور اور کنڈیکٹرز بھی موجود تھے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے کہا کہ وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد جہاں یونیورسٹی کی خوبصورتی اور طلباء کو بہترین تعلیمی ماحول کی فراہمی کیساتھ ساتھ ضروریات زندگی کی بہترین ضروری سہولیات فراہمی کیلئے بھی کوشاں ہیں ۔ اور یہ ان کی مثبت سوچ کا اثر ہے کہ گومل یونیورسٹی نے تمام تر قانونی تقاضوں پر عملدرآمد کرنے کے بعد نہایت ہی کم اور مناسب اخراجات میں تین پرانی بسوں کی تزئین و آرائش کرکے ان کو طلباء اور ملازمین کے استعمال کے قابل بنا دیا ہے ۔ انہوںنے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی میں نئی فیکلٹی اور مختلف شعبہ جات کے اجراء کے بعد طلباء کی تعداد بڑھ گئی ہے جس کی وجہ سے طلباء کو یونیورسٹی تک پہنچانے میں بہت مشکلات درپیش تھیں کیونکہ ان بسوں کی حالت چلنے کے قابل نہیں تھی جس کے بعد وائس چانسلر نے ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ کو فوری طور پر احکامات صادر فرمائیں کہ ان بسوں کو تمام تر قانونی تقاضوں کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے فوری طور پر ٹھیک کروائیں جس کے بعد آج ہمیں یہ بسیں انتہائی خوبصورت اور استعمال کے قابل بن گئیں ۔اس موقع پرڈائریکٹر ٹرانسپورٹ محمد عمران خان نے وائس چانسلر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ وائس چانسلر نے ہمارا بہت ہی اہم مسئلہ حل کر دیا انہوںنے مزید کہا کہ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ان بسوں کی تزئین وآرائش میں ٹرانسپورٹ سیکشن کے تمام ملازمین کی بھی دن رات کی محنت شامل ہیں ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 44 days ago
گومل یونیورسٹی کے ٹرانسپورٹ سیکشن کی تین پرانی بسوں کو تمام ترقانونی تقاضوں کے بعد نہایت ہی کم اخراجات پر تزئین و آرائش کے بعد استعمال کے قابل بنا دیا گیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'راجہ عالم زیب ،پبلسٹی آفیسر)گومل یونیورسٹی کے ٹرانسپورٹ سیکشن کی تین پرانی بسوں کو تمام ترقانونی تقاضوں کے بعد نہایت ہی کم اخراجات پر تزئین و آرائش کے بعد استعمال کے قابل بنا دیا گیا اس موقع پر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے فیتہ کاٹ کر بسوں کا باقاعدہ افتتاح کیا۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات کے ڈین 'ڈائریکٹر فنانس، ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ سمیت دیگر ملازمین ،ڈرائیور اور کنڈیکٹرز بھی موجود تھے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے کہا کہ وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد جہاں یونیورسٹی کی خوبصورتی اور طلباء کو بہترین تعلیمی ماحول کی فراہمی کیساتھ ساتھ ضروریات زندگی کی بہترین ضروری سہولیات فراہمی کیلئے بھی کوشاں ہیں ۔ اور یہ ان کی مثبت سوچ کا اثر ہے کہ گومل یونیورسٹی نے تمام تر قانونی تقاضوں پر عملدرآمد کرنے کے بعد نہایت ہی کم اور مناسب اخراجات میں تین پرانی بسوں کی تزئین و آرائش کرکے ان کو طلباء اور ملازمین کے استعمال کے قابل بنا دیا ہے ۔ انہوںنے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی میں نئی فیکلٹی اور مختلف شعبہ جات کے اجراء کے بعد طلباء کی تعداد بڑھ گئی ہے جس کی وجہ سے طلباء کو یونیورسٹی تک پہنچانے میں بہت مشکلات درپیش تھیں کیونکہ ان بسوں کی حالت چلنے کے قابل نہیں تھی جس کے بعد وائس چانسلر نے ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ کو فوری طور پر احکامات صادر فرمائیں کہ ان بسوں کو تمام تر قانونی تقاضوں کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے فوری طور پر ٹھیک کروائیں جس کے بعد آج ہمیں یہ بسیں انتہائی خوبصورت اور استعمال کے قابل بن گئیں ۔اس موقع پرڈائریکٹر ٹرانسپورٹ محمد عمران خان نے وائس چانسلر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ وائس چانسلر نے ہمارا بہت ہی اہم مسئلہ حل کر دیا انہوںنے مزید کہا کہ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ان بسوں کی تزئین وآرائش میں ٹرانسپورٹ سیکشن کے تمام ملازمین کی بھی دن رات کی محنت شامل ہیں ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 44 days ago
گومل یونیورسٹی کے ٹرانسپورٹ سیکشن کی تین پرانی بسوں کو تمام ترقانونی تقاضوں کے بعد نہایت ہی کم اخراجات پر تزئین و آرائش کے بعد استعمال کے قابل بنا دیا گیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ'راجہ عالم زیب ،پبلسٹی آفیسر)گومل یونیورسٹی کے ٹرانسپورٹ سیکشن کی تین پرانی بسوں کو تمام ترقانونی تقاضوں کے بعد نہایت ہی کم اخراجات پر تزئین و آرائش کے بعد استعمال کے قابل بنا دیا گیا اس موقع پر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے فیتہ کاٹ کر بسوں کا باقاعدہ افتتاح کیا۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات کے ڈین 'ڈائریکٹر فنانس، ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ سمیت دیگر ملازمین ،ڈرائیور اور کنڈیکٹرز بھی موجود تھے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے کہا کہ وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد جہاں یونیورسٹی کی خوبصورتی اور طلباء کو بہترین تعلیمی ماحول کی فراہمی کیساتھ ساتھ ضروریات زندگی کی بہترین ضروری سہولیات فراہمی کیلئے بھی کوشاں ہیں ۔ اور یہ ان کی مثبت سوچ کا اثر ہے کہ گومل یونیورسٹی نے تمام تر قانونی تقاضوں پر عملدرآمد کرنے کے بعد نہایت ہی کم اور مناسب اخراجات میں تین پرانی بسوں کی تزئین و آرائش کرکے ان کو طلباء اور ملازمین کے استعمال کے قابل بنا دیا ہے ۔ انہوںنے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی میں نئی فیکلٹی اور مختلف شعبہ جات کے اجراء کے بعد طلباء کی تعداد بڑھ گئی ہے جس کی وجہ سے طلباء کو یونیورسٹی تک پہنچانے میں بہت مشکلات درپیش تھیں کیونکہ ان بسوں کی حالت چلنے کے قابل نہیں تھی جس کے بعد وائس چانسلر نے ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ کو فوری طور پر احکامات صادر فرمائیں کہ ان بسوں کو تمام تر قانونی تقاضوں کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے فوری طور پر ٹھیک کروائیں جس کے بعد آج ہمیں یہ بسیں انتہائی خوبصورت اور استعمال کے قابل بن گئیں ۔اس موقع پرڈائریکٹر ٹرانسپورٹ محمد عمران خان نے وائس چانسلر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ وائس چانسلر نے ہمارا بہت ہی اہم مسئلہ حل کر دیا انہوںنے مزید کہا کہ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ان بسوں کی تزئین وآرائش میں ٹرانسپورٹ سیکشن کے تمام ملازمین کی بھی دن رات کی محنت شامل ہیں ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 44 days ago
مورخہ02مارچ 2021
گومل یونیورسٹی کے ٹرانسپورٹ سیکشن کی تین پرانی بسوں کو تمام ترقانونی تقاضوں کے بعد نہایت ہی کم اخراجات پر تزئین و آرائش کے بعد استعمال کے قابل بنا دیا گیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ:راجہ عالم زیب، پبلسٹی آفیسر)گومل یونیورسٹی کے ٹرانسپورٹ سیکشن کی تین پرانی بسوں کو تمام ترقانونی تقاضوں کے بعد نہایت ہی کم اخراجات پر تزئین و آرائش کے بعد استعمال کے قابل بنا دیا گیا اس موقع پر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے فیتہ کاٹ کر بسوں کا باقاعدہ افتتاح کیا۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات کے ڈین 'ڈائریکٹر فنانس، ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ سمیت دیگر ملازمین ،ڈرائیور اور کنڈیکٹرز بھی موجود تھے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے کہا کہ وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد جہاں یونیورسٹی کی خوبصورتی اور طلباء کو بہترین تعلیمی ماحول کی فراہمی کیساتھ ساتھ ضروریات زندگی کی بہترین ضروری سہولیات فراہمی کیلئے بھی کوشاں ہیں ۔ اور یہ ان کی مثبت سوچ کا اثر ہے کہ گومل یونیورسٹی نے تمام تر قانونی تقاضوں پر عملدرآمد کرنے کے بعد نہایت ہی کم اور مناسب اخراجات میں تین پرانی بسوں کی تزئین و آرائش کرکے ان کو طلباء اور ملازمین کے استعمال کے قابل بنا دیا ہے ۔ انہوںنے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی میں نئی فیکلٹی اور مختلف شعبہ جات کے اجراء کے بعد طلباء کی تعداد بڑھ گئی ہے جس کی وجہ سے طلباء کو یونیورسٹی تک پہنچانے میں بہت مشکلات درپیش تھیں کیونکہ ان بسوں کی حالت چلنے کے قابل نہیں تھی جس کے بعد وائس چانسلر نے ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ کو فوری طور پر احکامات صادر فرمائیں کہ ان بسوں کو تمام تر قانونی تقاضوں کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے فوری طور پر ٹھیک کروائیں جس کے بعد آج ہمیں یہ بسیں انتہائی خوبصورت اور استعمال کے قابل بن گئیں ۔اس موقع پرڈائریکٹر ٹرانسپورٹ محمد عمران خان نے وائس چانسلر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ وائس چانسلر نے ہمارا بہت ہی اہم مسئلہ حل کر دیا انہوںنے مزید کہا کہ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ان بسوں کی تزئین وآرائش میں ٹرانسپورٹ سیکشن کے تمام ملازمین کی بھی دن رات کی محنت شامل ہیں ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 44 days ago
مورخہ02مارچ 2021
گومل یونیورسٹی کے ٹرانسپورٹ سیکشن کی تین پرانی بسوں کو تمام ترقانونی تقاضوں کے بعد نہایت ہی کم اخراجات پر تزئین و آرائش کے بعد استعمال کے قابل بنا دیا گیا
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ:راجہ عالم زیب، پبلسٹی آفیسر)گومل یونیورسٹی کے ٹرانسپورٹ سیکشن کی تین پرانی بسوں کو تمام ترقانونی تقاضوں کے بعد نہایت ہی کم اخراجات پر تزئین و آرائش کے بعد استعمال کے قابل بنا دیا گیا اس موقع پر ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے فیتہ کاٹ کر بسوں کا باقاعدہ افتتاح کیا۔ اس موقع پر تمام شعبہ جات کے ڈین 'ڈائریکٹر فنانس، ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ سمیت دیگر ملازمین ،ڈرائیور اور کنڈیکٹرز بھی موجود تھے۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر ایڈمنسٹریشن پروفیسر ڈاکٹر محمد سلیم جیلانی نے کہا کہ وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد جہاں یونیورسٹی کی خوبصورتی اور طلباء کو بہترین تعلیمی ماحول کی فراہمی کیساتھ ساتھ ضروریات زندگی کی بہترین ضروری سہولیات فراہمی کیلئے بھی کوشاں ہیں ۔ اور یہ ان کی مثبت سوچ کا اثر ہے کہ گومل یونیورسٹی نے تمام تر قانونی تقاضوں پر عملدرآمد کرنے کے بعد نہایت ہی کم اور مناسب اخراجات میں تین پرانی بسوں کی تزئین و آرائش کرکے ان کو طلباء اور ملازمین کے استعمال کے قابل بنا دیا ہے ۔ انہوںنے مزید کہا کہ گومل یونیورسٹی میں نئی فیکلٹی اور مختلف شعبہ جات کے اجراء کے بعد طلباء کی تعداد بڑھ گئی ہے جس کی وجہ سے طلباء کو یونیورسٹی تک پہنچانے میں بہت مشکلات درپیش تھیں کیونکہ ان بسوں کی حالت چلنے کے قابل نہیں تھی جس کے بعد وائس چانسلر نے ڈائریکٹر ٹرانسپورٹ کو فوری طور پر احکامات صادر فرمائیں کہ ان بسوں کو تمام تر قانونی تقاضوں کو ملحوظ خاطر رکھتے ہوئے فوری طور پر ٹھیک کروائیں جس کے بعد آج ہمیں یہ بسیں انتہائی خوبصورت اور استعمال کے قابل بن گئیں ۔اس موقع پرڈائریکٹر ٹرانسپورٹ محمد عمران خان نے وائس چانسلر کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ وائس چانسلر نے ہمارا بہت ہی اہم مسئلہ حل کر دیا انہوںنے مزید کہا کہ یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ ان بسوں کی تزئین وآرائش میں ٹرانسپورٹ سیکشن کے تمام ملازمین کی بھی دن رات کی محنت شامل ہیں ۔
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 52 days ago
مورخہ22فروری 2021
اگر آپ کے فیصلے غیر جانبدارانہ ہوں اور اپنے جذبات پر قابو رکھنے کی صلاحیت ہو تو آپ کامیاب لیڈر بن سکتے ہیں 'وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ22فروری 2021)اگر آپ کے فیصلے غیر جانبدارانہ ہوں اور اپنے جذبات پر قابو رکھنے کی صلاحیت ہو تو آپ کامیاب لیڈر بن سکتے ہیں ۔ کیونکہ اگر یہ دو چیزیں نہ ہوں تو سسٹم تباہ ہو جاتا ہے ۔ان خیالا ت کاا ظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے گومل یونیورسٹی اور شریعہ اکیڈمی ،بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کے باہمی اشتراک سے ''اسلامک لاء '' کے موضوع پرہونیوالی سہ روزہ ورکشاپ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کیا۔ اس موقع پر ریٹائرڈ جسٹس دائودخان'بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کی شریعہ اکیڈمی کے معروف سکالرز ڈاکٹر عطاء اللہ خان وٹو،ڈاکٹر حبیب الرحمن، سمیع الرحمن ،حافظ احمد وقاص 'گومل یونیورسٹی کے تمام شعبہ جات کے ڈین، کوارڈینیٹر سٹی کیمپس ، ڈائریکٹر آئی ای آر ، پرنسپل لاء کالج عائشہ رسول سمیت سٹی کیمپس کے تمام شعبہ جات کے سربراہان،صدر ڈسٹرکٹ بار ڈیرہ قیضار خان میانخیل' سابق رجسٹرار گومل یونیورسٹی عالم خان محسود، ثمینہ قلندر ، ایجنسی ایجوکیشن آفیسر ،گومل یونیورسٹی سے ملحقہ تمام کالجز کے پرنسپل اور اساتذہ نے شرکت کی ۔تقریب میں سٹیج سیکرٹری کے فرائض ڈاکٹر رضا ء اللہ شاہ جبکہ تلاوت قرآن پاک کے فرائض ارسلان احمد نے ادا کئے ۔ ورکشاپ کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ لاء ایک نہایت سنجیدہ پیشہ ہے جیسا کہ سائنس اورمیڈیکل ہے اور ہمیں اس پر کام کرنے کی ضرورت ہے ۔آپ لاء کے طلباء ہیں اور آپ جانتے ہیں کہ انصاف کا تقاضا ہے کہ آپ کو اپنی خواہشات ،ذاتی پسند اور ناپسند کو مارنا پڑتا ہے کیونکہ جب ذاتی جذبات آتے ہیں تو وہاں انصاف نہیں ہوسکتا۔ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے لیڈر کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ لیڈر کا دل موم اور اس کے فیصلے فولادی ہونے چاہئیں۔ کیونکہ ہمارے معاشرے کا مسئلہ یہ ہے کہ جب آپ کسی کو تھوڑی سی بھی جگہ دیتے ہیں تو پھر وہ آپ کو چھوڑتا نہیں ہے۔ اور انہی سب چیزوں کیلئے کل آپ طلباء کو تعلیم حاصل کرنے کے بعد نکلنا ہے اور قوم کالیڈر بننا ہے۔ کیونکہ اس قوم کو بہترین لیڈرز کی ضرورت ہے لیڈر ق
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 2 photos - 55 days ago
مورخہ20فروری 2021
گومل یونیورسٹی کی لیبارٹریزاور تحقیق کیلئے زمین زرعی یونیورسٹی کیلئے ہمیشہ دستیاب ہے 'وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ20فروری 2021)گومل یونیورسٹی اور زرعی یونیورسٹی دونوں ہمارے ادارے ہیں اور ہم نے مل کر دونوں کو ترقی کی راہ پر گامزن کرنا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے گومل یونیورسٹی اور زرعی یونیورسٹی ڈیرہ کے درمیا ن ہونیوالی مفاہمتی یادداشت پر دستخط ہونے کے بعد کیا۔ اس موقع پر وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر مسرور الٰہی بابر سمیت گومل یونیورسٹی کے تمام شعبہ جات کے ڈین، دونوں یونیورسٹیوں کے رجسٹرار اور زرعی یونیورسٹی کے اعلیٰ افسران بھی موجود تھے۔ گومل یونیورسٹی کی طرف سے ڈائریکٹر اورک پروفیسر ڈاکٹر محمد نعمت اللہ بابر جبکہ زرعی یونیورسٹی ڈیرہ کی جانب سے رجسٹرار فخر الدین نے باہمی مفاہمت کی یادداشت پر دستخط کئے۔جس کے تحت دونوں یونیورسٹیوں میں باہمی متفقہ شرائط و ضوابط پرتعلیم کی ترقی اور تحقیق کو باہمی فروغ دینا شامل ہے اور اس مفاہمتی یادداشت سے دونوں یونیورسٹیوں کے طلباء کی بڑی تعداد مستفید ہو گی ۔ وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے اپنے خطاب میں کہا کہ گومل یونیورسٹی کی لیبارٹریزاور تحقیق کیلئے زمین زرعی یونیورسٹی کیلئے ہمیشہ دستیاب ہے اور گومل یونیورسٹی کے پروفیسر زبھی زرعی یونیورسٹی کے طلباء کواپنی ماہرانہ قابلیت سے مستفید کرنے کیلئے ہمیشہ تیار ہیں۔گومل یونیورسٹی سے زرعی یونیورسٹی کی ترقی و خوشحالی کیلئے جو ہو سکے گا وہ انشاء اللہ ضرور کرے گی ۔کیونکہ ہمارا مقصد طلباء کو تعلیمی ، تحقیق اور بہترین اخلاقی تربیت دینا ہے ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار نے مزید کہا کہ وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر مسرور الٰہی بابر زرعی یونیورسٹی کی ترقی اور اس میں پرامن اور بہترین تعلیمی ماحول کی فراہمی میں جس طرح تگ و دو کر رہے ہیں وہ قابل تحسین ہے۔ اور میری خواہش ہے کہ ڈاکٹر مسرور الٰہی گومل یونیورسٹی کی ترقی میں بھی اپنی قابلیت اور تجربے سے بھی کردار ادا کریں۔ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وائس چانسلر زرعی یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر مسرور الٰہی بابر نے کہا کہ علم دینے سے بڑھتاہے اور ماہرانہ رائے دینے سے فیصلوں میں پختگی آتی ہے اور ہماری
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 56 days ago
مورخہ19فروری 2021
اسلامک لاء کے موضوع پر ورکشاپ کا مقصد طلباء اور متعلقہ افراد کوشرعی قوانین سے روشناس کرانا ہے'وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹرافتخار احمد
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ19فروری 2021)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی کی زیر صدارت نواب اللہ نواز خان لاء کالج میں گومل یونیورسٹی اور شریعہ اکیڈمی ،بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کے باہمی اشتراک سے ''اسلامک لاء '' کے موضوع پر22،23 اور 24 فروری 2021کو ہونیوالی تین روزہ ورکشاپ کے انتظامات کا جائزہ لینے کیلئے میٹنگ کا انعقاد کیا گیا۔اس موقع پر وائس چانسلریونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی بنوں پروفیسر ڈاکٹر خیر الزمان،ڈین فیکلٹی آف لاء اینڈ ایڈمنسٹریٹویو سائنسز پروفیسر ڈاکٹر زاہد اعوان، پرنسپل لاء کالج عائشہ رسول ،ڈائریکٹر انسٹیٹیویٹ آف ایجوکیشن اینڈ ریسرچ ڈاکٹر اللہ نور خان، ڈپٹی رجسٹرار لیگل سیل سراج خان 'پرنسپل گورنمنٹ گرلز ڈگری کالج نمبر1،پرنسپل فرنٹیئر لاء کالج'پرنسپل لقمان لاء کالج سمیت لاء کالج کے اساتذہ بھی شریک تھے۔ وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ یونیورسٹیوں کا کام تعلیم کیساتھ ساتھ تحقیق اور تربیت دینا ہے۔ یونیورسٹیاں تحقیق کیلئے بنیاد فراہم کرتی ہیں اوریونیورسٹی میں ورکشاپ کروانے کے انعقاد کا مقصد طلباء اور علاقہ کے لوگوں کو آگاہی اور شعور فراہم کرنا ہے۔ پرنسپل لاء کالج عائشہ رسول نے میٹنگ میں ممبران کو بتایا کہ بین الاقوامی اسلامی یونیورسٹی اسلام آباد کی شریعہ اکیڈمی کے معروف سکالرز ڈاکٹر عطاء اللہ خان وٹو،ڈاکٹر حبیب الرحمن، سمیع الرحمن ،حافظ احمد وقاص و دیگر اس موقع پر شریعہ اسلامک لاء کے حوالے سے لیکچر دیں گے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس ورکشاپ سے نہ صرف گومل یونیورسٹی کے لاء کالج کے طلباء بلکہ ڈیرہ اسماعیل خان، ٹانک و دیگر مضافات سے تعلق رکھنے والے قانون سے وابستہ لوگوں کی بڑی تعداد شرعی قوانین سے مستفید ہو گی۔ میٹنگ میں ورکشاپ کے حوالے سے مختلف کمیٹیاں بھی تشکیل دی گئیں جو ورکشاپ میں اپنے مقررکردہ کاموں کوسرانجام دیںگی۔ واضح رہے کہ ورکشاپ سے مستفید ہونے کیلئے لاء کالج میں رجسٹریشن کا عمل شروع ہو چکا ہے جہاں طلبائ' وکلاء اور قانون سے وابستہ لوگ خود کو رجسٹرڈ کروا رہے ہیں۔
از طرف !راجہ عالم زیب
پی آر او گومل یونیورسٹی ، ڈیرہ اسماعیل خان
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 1 photos - 87 days ago
مورخہ18جنوری 2021
گومل یونیورسٹی میں ڈگریوں سے جُڑی ہوئی ماضی کی بے بنیاد خبروں کا آخر کار ڈراپ سین
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ18جنوری2021)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ آج کا دن گومل یونیورسٹی کی تاریخ میں انتہائی اہمیت کا حامل ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ دور میں جو جعلی ڈگریوں کے نام سے اس مادرعلمی کو بدنام کرنے کی مذموم کوشش کی گئی وہ انتہائی قابل افسوس ہے ۔ اِس حوالے سے ماضی میں جو کمیٹی تشکیل دی گئی تھی اُس نے ایگزام سیکشن میں 2013 سے 2016 تک موجود 4 سالہ ریکارڈ کا تفصیلی جائزہ لئے بغیر انتہائی جلد بازی میں رزلٹ میں موجود خامیوں کو جعلی ڈگریوں سے منسوب کیا جو بعد کی تحقیقات میں سراسر غلط ثابت ہوا اور اس 4 سالہ ریکارڈ میں ایک بھی ڈگری جعلی نہیں پائی گئی ۔ اُن کی اِس غیر ذمہ دارانہ رپورٹ سے گومل یونیورسٹی کو تعلیمی میدان میں ناقابل تلافی نقصان پہنچا ۔انہوں نے مزید کہا کہ شاید امتحانی معاملات کا تجربہ نہ ہونے کے سبب وہ کمیٹی یہ بنیادی نقطہ نہ سمجھ سکی کہ ایگزام سیکشن کے ریکارڈ میں کیا گیا جمع تفریق کا فرق ٹیمپرنگ تو کہلایا جا سکتا ہے جعلی ڈگری نہیں ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ بطور وائس چانسلر گومل یونیورسٹی کا چارج سنبھالا تو مجھے بتایا گیا کہ گومل یونیورسٹی کے چند دیرینہ اور توجہ طلب مسائل میں سب سے اہم اِس متنازعہ خبر کا جائزہ لینا ہے جو جعلی ڈگریوں کے نام سے میڈیا میں اور عوامی حلقوں میں گردش کر رہی تھی ۔ جس پر آتے ہی سب سے پہلے ڈاکٹر محمد صفدر بلوچ کو کنٹرولر امتحانات اور ڈاکٹر اصغر علی خان کو ایڈیشنل کنٹرولر امتحانات تعینات کیا تاکہ وہ ایگزام سیکشن میں موجود ہر قِسم کی انتظامی اور تکنیکی خامیوں کا جائزہ لیں اور گومل یونیورسٹی کے منظور شدہ قوانین کی روشنی میں اِن مسائل کا حل تجویز کریں ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ان ڈگریوں کے مسئلہ کو تمام قانونی تقاضوں کے تناظر میںنہایت باریک بینی سے دیکھنے کیلئے امتحانی معاملات کا کم و بیش 30سالہ تجربہ رکھنے والے کنٹرولر امتحانات ملاکنڈ یونیورسٹی شاہد خان کی سربراہی میں ایک کمیٹی تشکیل دی جس میں گومل یونیورسٹی سنڈیکیٹ کے دو معزز اراکین پرنسپل گرلز ڈگری کالج نمبر1شفقت یاسمین اور پرنسپل گورنمنٹ ڈگری کالج درابن شکیل ملک سمیت کنٹرولر امتحانات ڈاکٹر محمد صفدر بلوچ او
 
 
User Image Raja Alam Zeb Posted 0 photos - 87 days ago
مورخہ18جنوری 2021
گومل یونیورسٹی میں ڈگریوں سے جُڑی ہوئی ماضی کی بے بنیاد خبروں کا آخر کار ڈراپ سین
ڈیرہ اسماعیل خان(ہینڈ آئوٹ18جنوری2021)وائس چانسلر گومل یونیورسٹی پروفیسر ڈاکٹر افتخار احمد نے کہا کہ آج کا دن گومل یونیورسٹی کی تاریخ میں انتہائی اہمیت کا حامل ہے ۔انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ دور میں جو جعلی ڈگریوں کے نام سے اس مادرعلمی کو بدنام کرنے کی مذموم کوشش کی گئی وہ انتہائی قابل افسوس ہے ۔ اِس حوالے سے ماضی میں جو کمیٹی تشکیل دی گئی تھی اُس نے ایگزام سیکشن میں 2013 سے 2016 تک موجود 4 سالہ ریکارڈ کا تفصیلی جائزہ لئے بغیر انتہائی جلد بازی میں رزلٹ میں موجود خامیوں کو جعلی ڈگریوں سے منسوب کیا جو بعد کی تحقیقات میں سراسر غلط ثابت ہوا اور اس 4 سالہ ریکارڈ میں ایک بھی ڈگری جعلی نہیں پائی گئی ۔ اُن کی اِس غیر ذمہ دارانہ رپورٹ سے گومل یونیورسٹی کو تعلیمی میدان میں ناقابل تلافی نقصان پہنچا ۔انہوں نے مزید کہا کہ شاید امتحانی معاملات کا تجربہ نہ ہونے کے سبب وہ کمیٹی یہ بنیادی نقطہ نہ سمجھ سکی کہ ایگزام سیکشن کے ریکارڈ میں کیا گیا جمع تفریق کا فرق ٹیمپرنگ تو کہلایا جا سکتا ہے جعلی ڈگری نہیں ۔ وائس چانسلر ڈاکٹر افتخار احمد نے مزید کہا کہ بطور وائس چانسلر گومل یونیورسٹی کا چارج سنبھالا تو مجھے بتایا گیا کہ گومل یونیورسٹی کے چند دیرینہ اور توجہ طلب مسائل میں سب سے اہم اِس متنازعہ خبر کا جائزہ لینا ہے جو جعلی ڈگریوں کے نام سے میڈیا میں اور عوامی حلقوں میں گردش کر رہی تھی ۔ جس پر آتے ہی سب سے پہلے ڈاکٹر محمد صفدر بلوچ کو کنٹرولر امتحانات اور ڈاکٹر اصغر علی خان کو ایڈیشنل کنٹرولر امتحانات تعینات کیا تاکہ وہ ایگزام سیکشن میں موجود ہر قِسم کی انتظامی اور تکنیکی خامیوں کا جائزہ لیں اور گومل یونیورسٹی کے منظور شدہ قوانین کی روشنی میں اِن مسائل کا حل تجویز کریں ۔ وائس چانسلر نے مزید کہا کہ ان ڈگریوں کے مسئلہ کو تمام قانونی تقاضوں کے تناظر میںنہایت باریک بینی سے دیکھنے کیلئے امتحانی معاملات کا کم و بیش 30سالہ تجربہ رکھنے والے کنٹرولر امتحانات ملاکنڈ یونیورسٹی شاہد خان کی سربراہی میں ایک کمیٹی تشکیل دی جس میں گومل یونیورسٹی سنڈیکیٹ کے دو معزز اراکین پرنسپل گرلز ڈگری کالج نمبر1شفقت یاسمین اور پرنسپل گورنمنٹ ڈگری کالج درابن شکیل ملک سمیت کنٹرولر امتحانات ڈاکٹر محمد صفدر بلوچ او